زراعت بل کیخلاف احتجاج: تیجسوی ،تیج پرتاپ اور پپو یادو کے خلاف ایف آئی آردرج

پٹنہ،بہار کے دارالحکومت پٹنہ میں زراعت بل کے خلاف احتجاج کرنے والے راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے رہنما تیجسوی یادو، تیج پرتاپ یادو کے خلاف ایک مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ ان دونوں کے علاوہ پپو یادو کے خلاف بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے۔دراصل 25 ستمبر کو تمام اپوزیشن جماعتوں نے زراعت بل کی مخالفت کرتے ہوئے بھارت بند کا اعلان کیا تھا۔ بہار میں بھی حزب اختلاف کی جماعتیں اس بند کی حمایت کے لئے سڑکوں پر نکل گئیں۔ بہار کے اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو اور ان کے بڑے بھائی تیج پرتاپ یادو 10 آر جے ڈی کارکنوں کے ساتھ ٹریکٹر چلا کر آر جے ڈی آفس پہنچے۔ تیجسوی اور تیج پرتاپ یادو 10 سرکلر سے بیلی روڈ تک آر جے ڈی آفس پہنچے ،وہ کورونا کی وجہ سے بلاک کیا ہوا علاقہ ہے۔دوسری طرف جن ادھیکار پارٹی کے سپریمو پپو یادو اپنے سیکڑوں کارکنوں کے ساتھ ملکر کسانوں کے بل کے خلاف احتجاج کرنے انکم ٹیکس سے ٹریکٹر چلاتے ہوئے ڈاک بنگلہ چوراہا تک پہنچے وہ بھی پابندی والا علاقہ ہے۔ اسی وجہ سے پٹنہ کے کوتوالی تھانے میں تیجسوی یادو، تیج پرتاپ یادو اور پپو یادو سمیت 100 افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔پٹنہ کے تھانہ کوتوالی پولیس اسٹیشن میں تعزیرات ہند کی دفعہ 188 اور 353 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔