یوراج سنگھ نے کسان تحریک کی حمایت کی

نئی دہلی:ہندوستان کے ورلڈ کپ 2011 کی جیت کے ہیرواورسابق آل راؤنڈر یووراج ہفتے کے روز 39 سال کے ہو گئے ہیں لیکن انہوں نے اپنی سالگرہ منانے کے بجائے کسانوں کے مسائل کو بات چیت کے ذریعے حل کرنے کی امید کی۔یوراج نے لوگوں سے بھی اپیل کی کہ وہ کورونا وائرس کے وبا کے دوران احتیاط برتیں۔یوراج نے ٹویٹر پر لکھاکہ سالگرہ کسی بھی خواہش یا خواہش کو پورا کرنے کا موقع ہوتا ہے لیکن سالگرہ منانے کے بجائے میری دعا ہے کہ ہمارے کسانوں اور ہماری حکومت کے مابین جاری مکالمہ اس مسئلے کا حل نکل سکے۔ انہوں نے کہاکہ اس میں کوئی شک نہیں کہ کسان ہندوستان کی زندگی کے اہم ستون ہیں اور مجھے یقین ہے کہ اس میں کوئی پریشانی نہیں جس کا پرامن بات چیت سے حل نہ نکل سکے۔ یوراج نے اپنے والد یوگراج سنگھ کے متنازعہ بیانات سے بھی خود کو الگ کرلیا جو اس ہفتے انہوں نے احتجاج کے دوران دیا تھا۔انہوں نے کہاکہ ایک ہندوستانی ہونے کے ناطے میں یوگراج سنگھ کے بیانات سے افسردہ اور مایوس ہوں۔ میں یہ واضح کرنا چاہتا ہوں کہ یہ ان کی ذاتی رائے ہے اور میں ان کے خیالات سے اتفاق نہیں رکھتاہوں۔ یوراج نے کہاکہ میں سب سے گزارش کرتا ہوں کہ وہ کورونا وائرس کے وبا کے درمیان پوری توجہ رکھے۔ ابھی وبا ختم نہیں ہوئی ہے اور ہمیں اس کو شکست دینے کے لیےاحتیاط برتنی ہوگی۔