یوگی راج میں عوام خوفزدہ:اکھلیش یادو

لکھنو:یوگی حکومت ایک بار پھر اتر پردیش میں امن وامان سے متعلق سوالات میں گھری ہوئی ہے۔ لکھیم پور کھیری میں اتوارکے روزایک زمینی تنازعہ میں سابق ایم ایل اے نرویندر کمار مشرا کے قتل کے بعد اپوزیشن حملہ آور ہے۔ سابق وزیراعلیٰ اکھلیش یادو نے کہاہے کہ ریاست اس واقعے سے لرز اٹھی ہے۔اکھلیش یادو نے کہا کہ پولیس کی موجودگی میں ایم ایل اے رہنے والے نرویندر مشرا کے وحشیانہ قتل اور ان کے بیٹے پرقاتلانہ حملے سے ریاست لرز اٹھی ہے۔ بی جے پی کے اقتدار میں ریاست کے عوام نہ صرف بدامنی سے پریشان ہیں بلکہ وہ خوفزدہ بھی ہیں۔اس واقعے کے بارے میں کانگریس کے ریاستی صدراجے کمارللونے کہاہے کہ یہ یوگی آدتیہ ناتھ کا جنگل راج ہے ، جہاں عوامی نمائندے بھی محفوظ نہیں ہیں۔ ریاست میں بگڑتے ہوئے سکیورٹی سسٹم کے بارے میں اجے کمار للونے کہاکہ لکھیم پور کھیری میں صرف 15 دن کے اندر 15 سے زیادہ قتل ہوچکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایک تنازعہ میں تین بار کے ایم ایل اے نروندر کمار مشرا کو مارا گیا۔ یہ یوگی آدتیہ ناتھ کا جنگل راج ہے ، جس میں عوامی نمائندہ بھی محفوظ نہیں ہے۔ آپ عام آدمی کی سلامتی کا تصور بھی نہیں کرسکتے ہیں۔اجے کمار للونے ٹویٹ کیاکہ لکھیم پورکھیری میں نابالغوں کے قتل کے بعد یوپی کے جنگل راج نے اب سابق ایم ایل اے کو اپنا شکار بنالیا۔ 3 مرتبہ ایم ایل اے رہ چکے نروندر مشرا کا بے رحمانہ قتل ہوا ہے۔ وزیراعلیٰ! آپ اپنی ناکامیوں کا جائزہ کب لیں گے؟ کب تک آپ ان اموات پرخاموش رہیں گے؟