یوگی کی رہائش گاہ پرکانگریس کارکنان کا مظاہرہ،’چندہ چور،گدی چھوڑ‘کے نعرے

لکھنؤ: ایودھیا میں رام مندر کے لیے زمیں کی خریداری میں مبینہ گھوٹالہ کے معاملے میں لکھنؤ میں کانگریس کارکنوں نے پیر کے روز وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی رہائش گاہ پر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ اس مظاہرے میں پارٹی کی خواتین کارکنان بھی شامل تھیں۔ کانگریس کارکنوں نے وزیر اعلی کی رہائش گاہ کے باہر کافی دیر تک ’چندہ چور، گدّی چھوڑ‘کے نعرے لگائے۔ الزام ہے کہ احتجاجی مظاہرہ کو روکنے کے دوران مرد پولیس اہلکاروں نے خواتین کارکنوں کے ساتھ مار پیٹ کی۔ فی الحال مظاہرین کو پولیس نے گرفتار کرلیا ہے۔واضح رہے کہ اتوار کے روز سماج وادی پارٹی اور عام آدمی پارٹی نے رام جنم بھومی ٹرسٹ پر رام مندر ایودھیا کے لیے زمین خریدنے میں بڑی بدعنوانی کا الزام عائد کیا تھا۔ سماج وادی پارٹی (ایس پی) نے میں ایودھیا اور عام آدمی پارٹی (آپ) نے لکھنؤ میں ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ ٹرسٹ کے سکریٹری چمپت رائے نے جو زمین کچھ وقت قبل صرف دو کروڑ میں فروخت ہوئی تھی ۔ اسی زمین کو بعد میں 18.5 کروڑ میں زمین خرید کر ایک بڑا گھوٹالہ کیا ہے۔ چمپت رائے نے اس بارے میں میڈیا کو بتایا تھا کہ ہمیں ان الزامات کی فکر نہیں ہے۔ ہم پر مہاتما گاندھی کے قتل کا الزام بھی عائد کیا گیا تھا۔ رام جنم بھومی ٹرسٹ کے سکریٹری چمپت رائے نے اتوار کی نصف شب میں ایک پریس ریلیز جاری کی اور ان الزامات پر اپنا مؤقف رکھا ۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی منافرت سے متاثر لوگ زمین کی خریداری کے حوالے سے معاشرے کو گمراہ کرنے کے لیے گمراہ کن پروپیگنڈہ کررہے ہیں۔ الزامات پر چمپت رائے نے کہا کہ اس حوالے سے جو سیاسی لوگ مہم چلا رہے ہیں وہ گمراہ کن ہیں اور معاشرے کو گمراہ کرنے کے لیے ہیں۔