یوگی کے راستے پراودھوٹھاکرے

ممبئی:اودھوٹھاکرے بھی اب یوگی آدتیہ ناتھ کے نقش قدم پرہیں۔مقامات اور شہروں کے نام تبدیل کرنے کی سیاست اب مہاراشٹراتک پہنچ چکی ہے۔مہاراشٹرامیں ٹھاکرے حکومت اورنگ آبادکانام بدل کرسمبھاجی نگرکرنے جارہی ہے۔شیوسیناپارٹی نے اپنے ترجمان سامنامیں ایک مضمون لکھا ہے جس میں کہاگیاہے کہ پارٹی جلد ہی اورنگ آباد کا نام بدل کر سمبھاجی نگر رکھنے والی ہے۔بی جے پی پرحملہ کرتے ہوئے شیوسینا نے مزیدکہاہے کہ ایک طرف پاکستان میں مندروں کوتوڑا جارہا ہے اور بی جے پی تماشائی بن رہی ہے ، دوسری طرف بی جے پی مہاراشٹر حکومت کو گرانے کے مواقع کی تلاش میں ہے۔جب کہ شیوسینانے مدھیہ پردیش میں مسجدپرحملے پرکچھ نہیں کہاہے ۔اورنگ آباد کا نام تبدیل کرناشیوسیناکاایک پرانا مطالبہ رہا ہے ، لیکن اس کا اثر شیو سینا کی حکومت بنانے والی اتحاد یعنی مہاراشٹر وکاس اگھاڑی (ایم وی اے)پربھی پڑتاہے۔ مہاراشٹرا کانگریس کے صدر بالاصاحب تھوراٹ پہلے ہی اس مسئلے پر کہہ چکے ہیں کہ اس معاملے کا ذکر ایم وی اے کے کم ازکم مشترکہ پروگرام میں نہیں کیاگیاہے۔اس طرح کانگریس لیڈر نے اتحاد کی اصل حلیف شیو سینا پر برہمی کااظہارکیاہے۔ اس پر ، شیوسینا نے اپنے ترجمان سامنا میں کہا ہے کہ ایم وی اے گورنمنٹ کی پالیسیوں اور رول بک میں نام کی تبدیلی کے معاملے کو شامل کرنا احمقانہ ہوگا کیونکہ اس سے قبل نام کی تبدیلی کے لیے کانگریس کی مخالفت ہوچکی ہے۔شیوسینانے لکھا ہے کہ کانگریس قائد کے بیان کے بعد شیوسینا کو اپنا موقف واضح کرنے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ پارٹی نے اس معاملے پر اپنے پہلے موقف سے انحراف نہیں کیا ہے اور نام کی تبدیلی کے مطالبے میں ہمیشہ پیش پیش رہی ہے۔