’وزیر اعظم سوندھی اسکیم‘ کے تحت25 لاکھ سے زیادہ درخواستیں موصول

نئی دہلی:وزیراعظم سوندھی پردھان منتری خوانچہ فروشوں کی آتم نربھر ندھی کے تحت25لاکھ سے زیادہ درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔یہ چھوٹے پیمانوں کی قرضوں کی سہولت کی ایک خصوصی اسکیم ہے۔ موصولہ مجموعی درخواستوں میں سے 12 لاکھ سے زیادہ درخواستوں کو منظوری دی جاچکی ہیں اورتقریبا 5 لاکھ 35 ہزارقرضے فراہم کیے جاسکے ہیں۔ اترپردیش میں ساڑھے چھ لاکھ سے زیادہ درخواستیں موصول ہوئیں جس میں تقریبا 27 ہزار درخواستوں کو منظوری دی جاچکی ہیں اور ایک لاکھ 87 ہزارقرضے فراہم کیے جاچکے ہیں۔اترپردیش میں سوندھی یوجنا کی قرضے کے سمجھوتے کے لیے اسٹامپ ڈیوٹی کو مستثنی قرار دے دیا گیا ہے۔کوویڈ-19لاک ڈاؤن کے باعث جو خوانچہ فروش اپنے آبائی وطن چلے گئے تھے، وہ اپنی واپسی پر اس قرضے کے لیے اہل ہیں۔قرضوں کی فراہمی کو جھنجھٹ سے پاک بنایا گیا ہیکیوں کہ کوئی بھی شخص کسی عام خدمات مرکز اور میونسپل دفتر اور خود بینک جاکر اپنے طور پر درخواست کوآن لائن اپلوڈ کرسکتاہے۔ادھر بینک بھی لوگوں کے گھر گھر جارہے ہیں تاکہ انہیں قرضے فراہم کریں اور انہیں اپنے کاروبار شروع کرنے میں مدد دیں۔ وزیراعظم نریندرمودی نے بینک عملے کے ذریعہ کیے گئے مشقتی کام کی ستائش کی ہے اور کہا ہے کہ ایک ایسا وقت بھی تھا جب خوانچہ فروش بینک کے اندر ہی نہیں جاسکتے تھے لیکن آج ایسا ہے کہ بینک ان کے گھر جارہے ہیں۔شفافیت، احتساب اور پائیداری کے ساتھ اسکیم کے تیز تر نفاذ کے لیے ویب پورٹل نیز موبائل ایپ کے ساتھ ایک ڈیجیٹل پلیٹ فارم تیار کیا گیاہے جس کا مقصد شروع سے آخر تک اسکیم کا انتظام کرتے ہوئیحل فراہم کرنا ہے۔آئی ٹی پلیٹ فارم ،ویب پورٹل نیز موبائل ایپ کو ایس آئی ڈی ڈی آئی کے اڈیامی مترا پورٹل کے ساتھ مربوط کرتا ہے جو کہ قرضے کے انتظامیہ کے لیے ہے۔ یہ ہاؤسنگ اور شہری امور کی وزارت کے پورٹل ‘پیسہ’ سے بھی اسے مربوط کرتا ہے جو خودکار طور پر سود کی مراعات کا انتظام کرتاہے۔اسکیم کی ترغیبات کے ڈیجیٹل لین دین یعنی یوپی آئی، ادائیگی کے تسہیل کاروں کے کیو آر کوڈ، روپئے، ڈیبٹ کارڈ وغیرہ جیسے ڈیجیٹل طریقوں کو استعمال کرتے ہوئے رسیدیں/ادائیگیوں کی سہولت دستیاب کی گئی ہے جو کہ خوانچہ فروشوں کو ماہانہ کیش بیک کی صورت میں حاصل ہوتی ہیں۔ہاؤسنگ اور شہری امور کی وزارت کے سکریٹری درگا شنکر مشرا نے پہلے ٹوئٹ کیا تھا ان کی وزارت اس عمل کو آسان اور بلا جدوجہد والا بنانے کے لیے تمام متعلقہ ساجھیداروں کے ساتھ کام کررہی ہے تاکہ آتم نربھر بھارت کے مقصد کو حاصل کیاجاسکے۔کووڈ-19 کی وبا کے دوران لاک ڈاؤن میں مقامی تاجروں کے لچکدار رویے سامنے آئے اور سرکار کی مدد سے وہ اپنا کاروباردوبارہ شروع کرسکتے ہیں اوراپنی زندگیوں کو بہتر بناسکتے ہیں۔ان خوانچہ فروشوں میں سے اکثر جنہیں سوندھی اسکیم کیذریعہ قرضہ فراہم کیا گیا، وہ اپنے قرضوں کی بروقت واپس ادائیگی کررہے ہیں جس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ چھوٹی مدت کے قرض دار اپنی ایمانداراور بردباری کے ساتھ کوئی سمجھوتہ نہیں کرتے۔ہاؤسنگ اورشہری امور کے وزیرمملکت(آزادانہ چارج)جناب ہردیپ سنگھ پوری نے نفاذ کی صورت حال اورپی ایم سوندھی اسکیم کی پیش رفت کا جائزہ لیتے ہوئے ٹوئٹ کیا تھا کہ یہ آتم نربھر بھارت بنانے کی جانب ایک مثبت قدم ہے جس میں ہرایک ہندوستانی قوم کی ترقی اور پیش رفت کی رفتار میں ایک ساجھیدارہے۔اس اسکیم کے نفاذ میں شہری مقامی اداریانتہائی اہم کردارادا کررہے ہیں۔وہ تمام ساجھیداروں کا ایک نیٹ ورک بنارہے ہیں جن میں خوانچہ فروشوں کی ایسوسی ایشن ،کاوروباری کروسپوڈنٹ(بی سیز)، بینکوں کے ایجنٹ، چھوٹے مالیاتی ادارے( ایم ایف آئی)، ذاتی مدد کے گروپ (ایس ایس جی) اور ان کی فیڈریشن، بھیم،پے ٹی ایم، گوگل پے،بھارت پے، ایمازون پے، فون پے وغیرہ جیسے ڈیجیٹل ادائیگی کے تسہیل کارشامل ہیں جو اسکیم کو کامیابی کے ساتھ منظم کرنے کا قدم ہے۔