وقفۂ سوال کا خاتمہ:سرکار اپوزیشن کی آواز دبانا چاہتی ہے:اویسی

نئی دہلی:پارلیمنٹ میں مانسون اجلاس شروع ہوچکاہے۔اس موقعے پرلوک سبھاکے رکن اسدالدین اویسی نے پیر کو متعدد امورپرحکومت پر سوالات اٹھائے۔ انہوں نے کہا کہ ملک بہت ہی مشکل مرحلے میں ہے۔ کوویڈ کی وجہ سے بہت سارے افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ نوکریاں چلی گئیں۔ چین ہمارے ملک میں داخل ہوگیا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ حکومت اس پر بات کرے۔ مانسون کے اجلاس سے وقفۂ سوال کے خاتمے کے بارے میں انہوں نے کہا کہ حکومت اپنی پیٹھ دکھاکر بھاگ رہی ہے۔اویسی نے کہا کہ حکومت وقفہ سوال اورنجی ممبربل کو ختم کرکے حزب اختلاف اور ممبر ان کی آواز دباناچاہتی ہے۔ حکومت پیچھے ہٹ رہی ہے ، جمہوریت کے لیے یہ اچھانہیں ہے۔ اویسی نے حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری بل کوپاس کرنے کے لیے مانسون سیشن بہت کم ہے۔ آپ عوام کے سوال کو کس طرح اٹھائیں گے؟ انہوں نے کہا کہ ہم ہر طرح سے سوال پوچھیں گے۔ عوامی مسائل اٹھائیں گے۔ حکومت کو بے نقاب کریں گے۔اے آئی ایم آئی ایم کے سربراہ نے چین کے ساتھ سرحدی تنازعہ کا معاملہ بھی اٹھایاہے۔انھوں نے کہاہے کہ وزیر اعظم چین کا نام لینے سے کیوں ڈرتے ہیں؟ وزیر اعظم ملک کو گمراہ کررہے ہیں۔انھو ںنے جھوٹ بولاکہ کوئی نہیں آیا ، لیکن 1000 کلومیٹرکے فاصلے پرچینی فوج آگئی ہے۔