وازے کی این آئی اے تحویل میں 3 اپریل تک توسیع

ممبئی:صنعتکار مکیش امبانی کے گھر کے قریب گاڑی میں کے سلسلے میں گرفتارمعطل پولیس افسر سچن وازے کی این آئی اے تحویل میں خصوصی عدالت نے 3 اپریل کو توسیع کردی ہے۔واجے نے این آئی اے کی خصوصی عدالت کو بتایا کہ اس جرم سے ان کا کوئی لینا دینا نہیں ہے اور اسے قربانی کا بکرا بنایا گیا ہے۔ممبئی میں اسسٹنٹ پولیس انسپکٹر واجے (49) کو قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) نے 13 مارچ کو گرفتار کیا تھا۔ واجے کے پچھلے ریمانڈ کی میعاد ختم ہونے کے بعد انہیں عدالت میں پیش کیا گیا۔این آئی اے نے واجے کے خلاف سخت دفعات نافذ کی تھیں۔ ایجنسی نے اس کی مزید 15 دن حراست کا مطالبہ کیا۔وازے نے سماعت کے دوران جج پی آر ستار کو بتایاہے کہ مجھے قربانی کا بکرا بنایا گیا ہے اور اس معاملے سے میرا کوئی لینادینا نہیں ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ میں ڈیڑھ دن تک اس کیس کا تفتیشی آفیسر رہا اور میں اپنی پوری صلاحیت سے جو کچھ بھی کرسکتا ہوں وہ کرتاتھا۔ لیکن اچانک اس منصوبے میں کچھ تبدیلی آئی۔ میں خود این آئی اے کے دفتر گیا اور مجھے گرفتار کرلیا گیا۔وازے نے کہا کہ اس نے کسی جرم کا اعتراف نہیں کیا ہے۔این آئی اے کے وکیل ایڈیشنل سالیسیٹر جنرل انیل سنگھ نے عدالت کو بتایا کہ یہ جان کر سب حیران ہیں کہ ایک پولیس اہلکار اس جرم میں ملوث ہے۔