اترپردیش کے ماہرین تعلیم کا النور پبلک اسکول،سنبھل کا دورہ

سنبھل:(پریس ریلیز) قانون ساز اسمبلی اترپردیش کے سابق ممبر (MLC) اور سینیئر سیکنڈری اساتذہ گروپ (اترپردیش) کے جنرل سکریٹری رام بابو شاستری، سینیئر سیکنڈری اساتذہ گروپ (اترپردیش) کے نائب صدر ڈاکٹر دیویندر سنگھ، لکھوری انٹر کالج کے پرنسپل نواب حسن، ہند انٹر کالج کے سابق لیکچرار مقصود حسن اور ہند انٹر کالج کے سنسکرت کے لیکچرار نسیم حسین نے النور پبلک اسکول، سنبھل کا دورہ کیا۔ النور پبلک اسکول کے ڈائرکٹر ڈاکٹر محمد نجیب قاسمی، پرنسپل محمد حیات وارثی اور استاذ محمد سہیم نے مہمانوں کا استقبال کیا۔ رام بابو شاستری ایک بار پھر قانون ساز اسمبلی مرادآباد اور بریلی منڈل کے لئے امیدوار ہیں۔ موصوف سیکولر ذہن رکھنے والے ایک سادہ مزاج انسان ہیں جو اترپردیش میں تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔ قانون ساز اسمبلی اترپردیش میں 8 سیٹیں اساتذہ کے لئے محدود ہیں، جن میں سے بعض سیٹوں کا انتخاب نومبر 2020 کو ہونے جارہا ہے۔ اس میں حکومت سے منظور شدہ مدارس کا بھی ووٹ ہوتا ہے۔ اس موقع پر ڈاکٹر محمد نجیب قاسمی نے اسکول کے مقاصد پر مختصر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ وہ جلدی ہی آٹھویں کلاس تک سرکار سے منظوری لینے جارہے ہیں۔ النور پبلک اسکول کا قیام صرف ایک سال قبل ہی عمل میں آیا ہے، مگر اسکول کی عمارت اور کارکردگی دیکھ کر مہمان نہ صرف بہت زیادہ خوش ہوئے بلکہ اپنی مکمل سپورٹ کا بھی وعدہ کیا۔ امسال کورونا وبائی مرض کی وجہ سے اسکول بند ہیں،لیکن النور پبلک اسکول میں آن لائن کلاسوں کا سلسلہ برابر جاری ہے۔ 70 فیصد طلبہ آن لائن کلاسوں سے استفادہ کررہے ہیں۔ النور پبلک اسکول میں یتیم اور غریب بچوں کے لئے خاص رعایت دی جاتی ہے۔