اتراکھنڈ میں گلیشیر ٹوٹنے سے تشویش،گنگا سے متصل 27 اضلاع میں ہائی الرٹ

لکھنؤ:اتوار کے روز اتراکھنڈ کے چمولی ضلع میں گلیشیر ٹوٹ گیا ہے ، اس کی وجہ سے ، تپوو ن بیراج ، سری نگر ڈیم اور رشی کیش ڈیم کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ یہاں کام کرنے والے 150 مزدور اس حادثہ کے باعث لاپتہ ہیں۔ الک نندہ اور دھولی گنگا کی ندیوں میں طغیانی آئی ہوئی ہے، ا س کی تباہ کاری کے باعث اتر پردیش میں بھی الرٹ جاری کردیا گیا ہے۔ گنگا کے کنارے واقع یوپی کے ہاپوڑ ، بلندشہر ، بجنور سمیت 27 اضلاع میں الرٹ جاری کردیا گیا ہے۔ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے تمام اضلاع کے ڈی ایم ایس پی کو الرٹ رہنے کی ہدایت کی ہے۔وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ پوری صورتحال پر نظر رکھی جائے ۔ الرٹ موڈ پر SDRF کو رکھیں۔ دریائے گنگا کے کنارے آنے والے تمام اضلاع کے ڈی ایم ، ایس پیز کو پوری طرح چوکس رہنا چاہیے۔ بدایوں ، امروہہ ، بجنور ، میرٹھ ، مظفر نگر ، ہاپور ، بلندشہر ، علی گڑھ ، فرخ آباد ، قنوج ، اناؤ ، کان پور ، فتح پور ، وارانسی اضلاع کو مسلسل نگرانی کے باعث ہائی الرٹ کردیا گیا ہے۔ نائب وزیر اعلیٰ نے بتایا کہ محکمہ آبپاشی کوبھی الرٹ کردیا گیا ہے۔اتراکھنڈ میں گلیشئر ٹوٹنے کی کی صورت میں چیف منسٹر کی ہدایت پر ، ضلع / پولیس انتظامیہ ، این ڈی آر ایف / ایس ڈی آر ایف اور محکمہ آبپاشی کے عہدیداروں کو الرٹ کردیا گیا۔گنگا کے کنارے بسنے والے تمام لوگوں سے درخواست ہے کہ وہ انتظامیہ کی ہدایتوں پر عمل کریں۔اسی کے ساتھ ہی ، بلند شہر میں انتظامیہ نے گنگا میں پانی کی سطح میں اضافہ کے خوف کے سبب لوگوں کو دریا کے کنارے نہ جانے کا مشورہ دیا ہے۔ ہاپوڑ اور بجنور اضلاع سمیت ایک درجن اضلاع نے ندی کے کنارے والے علاقوں کو الرٹ کردیا گیاہے۔ بجنور میں گنگا کے کنارے کناروں پر کام کرنے والے کسانوں کو پولیس نے گھر بھیج دیا ہے۔ ضلع بجنور کے قریب 15 دیہات سیلاب کے خطرات کی زد میں ہیں۔ پولیس گنگا کے کنارے واقع دیہات میں الرٹ کا اعلان کررہی ہے۔خیال رہے کہ اتوار کے روز اتراکھنڈ کے چمولی ضلع میں گلیشیر ٹوٹ گیا، جس کے باعث دھولی گنگا کی ندیوں میں طغیانی آگئی ہے ۔ اس میں 100 سے 150 افراد کے ہلاک ہونے کا خدشہ ہے۔ چمولی کے علاقہ تپوون میں اس واقعے کی وجہ سے رشی گنگا بجلی پروجیکٹ کو بھی کافی نقصان پہنچا ہے۔ یہاں کام کرنے والے کئی مزدور لاپتہ ہیں۔ ندی کے کنارے واقع کئے مکانات بہہ چکے ہیں، آس پاس کے دیہاتوں کو خالی کرایا لیا گیا ہے۔