اردوکے آئینی حق پر حملہ ناقابل برداشت،بہار حکومت کو نوٹیفیکیشن واپس لینا ہوگا:پروفیسر انور پاشا

نئی دہلی:بہارمیں اردوکو دوسری سرکاری زبان کا درجہ حاصل ہے اور یہ آئینی وقانونی درجہ ہے،لیکن بہار حکومت کے ذریعے حال ہی میں جاری نوٹیفیکیشن اردو کی اس آئینی حیثیت کو مجروح کرنے کی سمت میں اٹھایا گیا قدم ہے جو کہ اردو آبادی کے لیے ناقابل برداشت ہے۔ پروفیسر انور پاشا ، کنوینر کل ہند انجمن اساتذۂ اردو جامعات ہند نے آج ایک بیان جاری کرتے ہوئے اس سلسلے میں حکومت بہار کو متنبہ کیا کہ اگر حکومت نے اس نوٹی فکیشن کو واپس نہیں لیا تو ریاست گیر سطح پر اس اردومخالف اقدام کے خلاف تحریک چلائی جائے گی۔ انھوں نے کہا کہ بہار میں اردو ہمیشہ تعلیمی نظام کا حصہ رہی ہے جس میں کوئی رخنہ نہیں پڑا ۔ گذشتہ حکومتوں نے اردو کی بڑی آبادی کے جمہوری حق کو تسلیم کرتے ہوئے اردو کی تعلیم کو اسکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں بدستور جاری رکھا، لیکن موجودہ حکومت کی نیت اردو کے سلسلے میں صاف نہیں لگتی جس کا ثبوت حال ہی میں جاری کردہ نوٹی فکیشن ہے جس کی رو سے ارد و کی تعلیم اب ریاست کے اسکولوں میں لازمی نہیں رہے گی۔ کیوں کہ اردو کو دوسری چا ر زبانوں کے ساتھ اختیاری زبان کے زمرے میں ڈال دیاگیاہے یعنی اب پہلے کی طرح اردو اساتذہ کی تقرری اسکولوں میں نہیں ہوگی بلکہ بھوجپوری، میتھلی ، بنگلہ اور اردو میں سے کسی ایک زبان کو ہی اختیاری زبان کے طور پر پڑھایا جائے گا اور ایک ہی استاد کی تقرری ہوگی۔ ظاہر ہے اب سرکاری اسکولوں میں بھوجپوری، میتھلی اور بنگلہ کے کسی استاد کی تقرری ہوگی اور طالب علموں سے کہا جائے گا کہ وہ انھیں زبانوں میں سے کسی ایک کو اختیار کریں۔ کیوں کہ جب اسکولوں میں اردو اساتذہ نہیں ہوں گے تو اردو کی تعلیم کا سلسلہ منقطع ہونا لازمی ہے۔ پروفیسر انور پاشا نے کہاہے کہ حکومت کو نہیں بھولنا چاہیے کہ اردوریاست بہار کی دوسری سرکاری زبان ہے اور اس حیثیت سے اردو کی تعلیم کا نظم ریاست کے ہر سرکاری اسکول میں لازمی ہے۔ پروفیسر پاشا نے بتایا کہ انھوں نے کل ہند انجمن اساتذۂ اردو جامعات ہندکی جانب سے اس سلسلے میں بہارکے گورنر،وزیراعلیٰ اور وزیر تعلیم کو میمورنڈم بھیج کر یہ مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس اردو مخالف نوٹی فکیشن کوجلدسے جلدواپس لیں اوراردوکے جمہوری وآئینی حقوق کو بحال رکھتے ہوئے ریاست میں اسکولوں ، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں اردوکی تمام خالی اسامیوں کو پر کرنے کے لیے اقدامات کریں۔