یوپی راجیہ سبھا الیکشن:تمام امیدوار بلا مقابلہ منتخب

لکھنو:راجیہ سبھاکے لیے اتر پردیش کی 10 نشستوں کے لیے تمام امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہوگئے ہیں۔ پیرکے روزالیکشن آفیسرنے اعلان کیاہے کہ نام واپسی کی مدت ختم ہوتے ہی امیدوار بلا مقابلہ منتخب ہوجائیں گے۔ اس کے ساتھ ہی بی جے پی تاریخ میں پہلی بار راجیہ سبھا میں بہترین اورکانگریس اپنی تاریخ کی بدترین حالت میں پہنچ گئی ہے۔اترپردیش کی ان نشستوں سے راجیہ سبھا پہنچنے والوں میں بی جے پی کی جانب سے مرکزی وزیرہردیپ سنگھ پوری ، ارون سنگھ ، سابق ڈی جی پی برج لال ، نیرج شیکھر ، ہریدوار دبے ، گیتا شکیہ ، بی ایل شرما اور سیما دویدی شامل ہیں۔ اسی دوران ایک نشست سماج وادی پارٹی کے رام گوپال یادو اور ایک سیٹ بہوجن سماج پارٹی کے رام جی گوتم کے پاس چلی گئی ہے۔25 نومبرکوراجیہ سبھا کے 10 ممبران پارلیمنٹ کا دورختم ہورہا ہے۔ ان میں بی جے پی کے تین ، سماج وادی پارٹی کے چار ، بی ایس پی کے دو اورکانگریس کے ایک رکن پارلیمنٹ شامل ہیں۔ راجیہ سبھا انتخابات میں بی جے پی یوپی میں 9 امیدواروں کو جیتنے کی پوزیشن میں تھی لیکن اس نے ایک نشست خالی چھوڑدی اور صرف 8 امیدواراتارے ۔ بی جے پی کے اس قدم نے سب کو حیران کردیا ، کانگریس اور ایس پی نے بی جے پی اور بی ایس پی پر اتحاد کا الزام لگایا۔اترپردیش اور اتراکھنڈ کی راجیہ سبھا کی 11 نشستوں کے نتائج صاف کرنے کے بعد ، راجیہ سبھا میں بی جے پی بلندی پرہے جبکہ کانگریس کی سیٹیں تاریخ کی سب سے کم ہوگئی ہیں۔ اب بی جے پی کے پاس کل 92 سیٹیں ہوں گی جبکہ کانگریس کے پاس صرف 38 سیٹیں ہوں گی۔ اگر ہم این ڈی اے کے بارے میں بات کریں تو راجیہ سبھا میں این ڈی اے کی کل تعداد 112 ہوگی۔ یہ تعداد اکثریت کے اعداد و شمار سے صرف 10 نشستوں کی دوری پر ہے۔ راجیہ سبھا کی کل نشستیں 245 ہیں جن میں سے 12 نشستوں پر صدر ممبران نامزد کرتے ہیں۔ باقی نشستوں پرانتخابات ہوتے ہیں۔