یوپی میں نوجوانوں کےلیے کیے گئے اعلانات کھوکھلے ثابت ہوئے:پرینکاگاندھی

نئی دہلی:کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی وڈرا نے بدھ کے روز یہ الزام لگایا کہ اتر پردیش میں نوجوانوں کے لئے روزگار کے لئے کئے جانے والے اعلانات کھوکھلے ثابت ہوئے ہیں اور اعلی تعلیم حاصل کرنے والے نوجوان منریگا کے تحت کام کرنے پر مجبور ہیں۔انہوں نے ایک خبر کاحوالہ دیتے ہوئے ٹویٹ کیاکہ یوپی میں نوجوانوں کے لئے کئے جانے والے تمام اعلانات بے فائدہ ثابت ہوئے ہیں۔ ایک طرف ایک بے روزگار خاتون (انامیکا شکلامعامہ) کے نام پر 25 جعلی اساتذہ کی بھرتی کی جاتی ہے۔ دوسری طرف نا اہل افراد دھوکہ دہی کے گروہوں کے ذریعہ اساتذہ کی بھرتی میں شامل ہورہے ہیں۔اترپردیش کے کانگریس انچارج نے دعوی کیاکہ ایم اے، بی ایس سی، بی ایڈ کرچکے لوگ ایم این آر ای جی اے میں ملازمت کرنے پر مجبور ہیں، یہ زمینی حقیقت ہے۔پرینکا اتر پردیش میں اساتذہ کی بھرتی کے معاملے پر یوگی آدتیہ ناتھ حکومت پر مسلسل حملہ کرتی رہی ہیں۔ انہوں نے منگل کے روز کہا تھا کہ وزیر اعلی آدتیہ ناتھ کو اس معاملے کی ذمہ داری لینی چاہئے اور سخت کاروائی کرنی چاہئے۔