یوپی:7سالہ بچی کاعصمت دری کے بعد سفاکانہ قتل،تنتر منتر سے متاثر ہوکر بچی کا گردہ چبا ڈالا

کانپور:یوپی کے کانپور میں دیوالی کی شب پولیس نے چھ سالہ بچی کے قتل میں لرزہ خیز انکشاف کیا ہے۔ پولیس نے اس معاملہ میں ایک میاں بیوی سمیت چار افراد کو گرفتار کیا۔ لڑکی کو کالا جادو اور تنتر منتر کے لیے قتل کیا گیا تھا۔ جادو اور تنتر منتر کے دقیانوسی تصورکے باعث اس جوڑے کی کوئی اولاد نہیں تھی ، لہٰذا اس درندے جوڑے نے ا پنے بھتیجے کے ساتھ مل کر بچی کا قتل کردیا۔بھتیجے نے اپنے دوست کے ساتھ مل کر پہلے معصوم بچی کے ساتھ زیادتی کی پھر اس کا گلا دبا کر قتل کردیا۔ اس کے بعد گردے کو باہر نکالا گیا اورآدم خور چچا چچی کو دیا گیا۔ اس آدم خور جوڑے(چچا اور چچی) نے گردے کا کچھ حصہ کھایا اور باقی کتے کو کھلادیا ۔ اس کے عوض میں بھتیجے کو 500 اور اس کے دوست کو 1000 روپے دییے گئے ۔ ایس پی دیہاتی برجیش سریواستو نے بتایا کہ گھاٹمپور تھانہ علاقہ کے بھدرس گاؤں کے ایک شخص کی 7 سالہ بیٹی ہفتہ کی شام کچھ سامان لینے پڑوس میں واقع دوکان گئی تھی ، لیکن گھر واپس نہیں لوٹی ۔ رات کے وقت گھر والوں نے اس کی تلاش جاری رکھی ، پولیس کو بھی آگاہ کیا۔ کچھ لوگوں کو صبح کے وقت کالی مندر کے قریب لڑکی کی مسخ شدہ لاش ملی، جسم پر کپڑے نہیں تھے۔ اس کی چپل قریب ہی خون سے لگی ہوئی تھی۔تفتیش سے یہ بات سامنے آ ئی کہ تنتر منتر کی وجہ سے اس جرم کو انجام دیا گیا ہے ۔ اس لیے کہ یہ واقعہ دیوالی کی شب پیش آیا۔ اس دن اگھوری سادھنا والے رسمیں ادا کرتے ہیں ، دوسرا یہ ہے کہ کالی مندر کے سامنے لاش ملی تھی، اور جسم کے کئی اعضاء کے کئی داخلی حصے بھی غائب تھے۔تفتیش کے دوران پولیس نے گاؤں سے ہی ان کول اور بیرن کو تحویل میں لیا۔ ان دونوں سے سختی سے پوچھ گچھ کی۔ پہلے تو دونوں ہی پولیس کو گمراہ کرتے رہے ، لیکن آخر کار انھوں نے اپنے جرم کا اعترا ف کرلیا۔ ان کول نے بتایا کہ چچا پرشورام نے ہمیں بتایا تھا کہ انہوں نے ایک کتاب(دیو مالائی کتاب) میں پڑھا ہے کہ اگر وہ اپنی بیوی کے ساتھ کسی بچے کا جگر کھاتے ہیں تو بچہ پیدا ہوگا۔اس کے لیے پرشورام نے انکول کو کچھ رقم دی، اس واقعے کو انجام دینے سے پہلے انکول پہلے اپنے دوست بیرن کے ساتھ شراب لایا،اور پھر پڑوس میں رہنے والی بچی کو پٹاخے کے بہانے اسے گھر لے آیا، اس کے بعد جنگل لے جانے کے بعد اس کے ساتھ منھ کالا کیا اور پھر اس کا گلا دبا کر قتل کردیا۔ پھر پیٹ چاک کرکے اس نے اندر سے تمام اعضاء نکال لئے اور پرشورما کو دے دی۔ ان کول کے مطابق چچا پرشورام نے اپنی بیوی کے ساتھ مل کر بچے کا جگرکھا لیا اور باقی جسم کو کتے کو کھلایا۔جس کے لئے چچا نے مجھے 500 روپے اور دوست بیرن کو 1000 روپے دیئے تھے ۔ دونوں آدم خور میا ں بیوی کو تحویل میں لیا گیا ہے،دونوں سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے اور اسی دوران ان کول اوربیرن کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا گیا ہے۔ وہیں یوپی کے مکھیا اور وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے بھی اس واقعہ کا نوٹس لیا ہے،انہوں نے افسران کو ملزم کو گرفتار کرنے کی ہدایت دی تھی ، جس کی وجہ سے کانپور پولیس نے تیزی دکھاتے ہوئے پیر کی رات دیر سے اس واقعہ کا انکشاف کیا ہے۔