ادھوٹھاکرے مہاراشٹر قانون سازکونسل کے بلامقابلہ ممبرمنتخب

ممبئی:مہاراشٹرا میں قانون ساز کونسل کی 9 خالی نشستوں پر 21 مئی کوالیکشن ہوناتھا لیکن اب اس کی ضرورت نہیں ہوگی کیونکہ3امیدواروں نے اپنے نام واپس لے لیے ہیں۔ جس کے بعد اب صرف 9 امیدوار میدان میں رہ گئے تھے۔ اسی وجہ سے مہاراشٹراکے وزیراعلیٰ ادھوٹھاکرے کو مہاراشٹر قانون ساز کونسل کا ممبر متفقہ طور پر منتخب کیا گیا ہے۔آپ کو بتادیں کہ ادھوٹھاکرے نے 28 نومبر کوریاست کے وزیر اعلیٰ کی حیثیت سے حلف لیاتھا جس کی وجہ سے ان کے لیے یہ ضروری ہوگیاتھاکہ وہ اسمبلی یا قانون سازکونسل کے کسی بھی ایوان کے ممبرمنتخب ہوجائیں۔ کیونکہ 6 ماہ کی ڈیڈ لائن ختم ہونے ہی والی تھی۔ ان کے نام انتخابی میدان سے واپس لینے کی آخری تاریخ صرف 14 مئی تک تھی۔ یہی وجہ ہے کہ آج اضافی امیدواروں نے اپنے نام واپس لے لیے جس کی وجہ سے انتخابات کی ضرورت بھی ختم ہوگئی۔مہاراشٹر قانون ساز کونسل میں بلامقابلہ منتخب ہونے والے 9 ممبران میں شیوسینا کے دو ، این سی پی کے دو ، کانگریس کے ایک اوربی جے پی کے چارشامل ہیں۔ مہاراشٹرا کے چیف منسٹر ادھو ٹھاکرے اور شیوسینا سے نیلم گورھے ، این سی پی سے ششی کانت شنڈے اور امول مٹکاری اور کانگریس سے رمیش لیجسلیٹو کونسل کے لیے منتخب ہوئے ہیں۔