اوبرانڈیامیں600 ملازمین کی چھٹی

نئی دہلی:کورونا بحران کے درمیان لاک ڈائون کے اعلان کے ساتھ ہی وزیراعظم نے زورشورسے کہاتھاکہ کسی کونوکری سے نہ نکالاجائے اورنہ کسی کی تنخواہ کاٹی جائے،لیکن زمینی سطح پراس کاکوئی اثرنہیں ہواہے۔ تنخواہوں میں کٹوتی اورنوکری سے نکالنے کی اطلاعات میں اضافہ ہونا شروع ہوگیا ہے۔ حال ہی میں ، آن لائن کیب بکنگ کی خدمات فراہم کرنے والی کمپنی اولانے1400 ملازمین کی چھٹی کااعلان کیا۔ اب اولا کے حریف اوبر انڈیا نے بھی 600 افراد کو برطرف کرنے کی بات کی ہے۔منگل کے روز اوبر انڈیا کے صدر پردیپ پرمیسورن نے کہاہے کہ امریکی کمپنی اوبرٹیکنالوجیز انک کی ہندوستانی شاخ میں600 نوکریوں میں کمی ہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے کاروبار متاثر ہوا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہ فیصلہ لیاجارہا ہے۔ بتادیں کہ ماضی میں ، امریکی کمپنی اوبر نے دنیا بھر میں 3700 ملازمین کونکالنے کے بارے میں بات کی تھی۔اسی دوران ، ٹی وی ایس موٹر کمپنی نے اپنے ملازمین کی تنخواہوں میں چھ ماہ کی مدت تک 20 فیصد کمی کردی ہے۔ کمپنی نے ابتدائی سطح کے ملازمین کو چھوڑ کر اس سال مئی سے اکتوبر تک ایگزیکٹو سطح پر تنخواہ میں کمی کا فیصلہ کیا ہے۔ ٹی وی ایس موٹرکمپنی کے ترجمان نے کہاہے کہ غیر متوقع بحران کے پیش نظر ، کمپنی نے چھ مہینوں (مئی سے اکتوبر ، 2020) تک مختلف سطحوں پر اجرت میں عارضی کمی کی ہے۔ آپ کو بتادیں کہ ٹی وی ایس موٹر کمپنی ملک کی تیسری سب سے بڑی دوپہیہ کمپنی ہے۔