ٹوئیٹ دباؤمیں تونہیں کیاگیا؟مہاراشٹرحکومت سچن ، لتا منگیشکر ،وراٹ کوہلی سمیت اسٹارزکے ٹوئیٹ کی جانچ کرائے گی

ممبئی:مہاراشٹر کے وزیر داخلہ انیل دیشمکھ نے سچن تندولکر، لتامنگیشکر،وراٹ کوہلی اور دیگر اسٹاروںکے ذریعہ کیے گئے ٹویٹس کی تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ مہاراشٹرا کی مہاوکاس اگھاڑی حکومت اس بات کی تحقیقات کرنا چاہتی ہے کہ کیا ان اسٹارز نے مودی حکومت کے دباؤ میں یہ ٹویٹس کیے ہیں؟کانگریس کی شکایت کے بعد مہاراشٹر حکومت نے یہ کارروائی شروع کی ہے۔کانگریس کے وفدنے وزیر داخلہ انیل دیشمکھ سے آن لائن میٹنگ کی ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ ریحانہ کے ٹویٹ کے بعد سچن تندولکر ، لتا منگیشکر ، وراٹ کوہلی سمیت کئی بڑے ستاروں نے ٹویٹ کیا ۔ان میںبہت سارے الفاظ یکساں تھے۔لہٰذایہ جانچنا بہت ضروری ہے کہ آیا یہ تمام ٹویٹس کسی دباؤ کے تحت کیے گئے یانہیں۔کانگریس نے اپنی شکایت میں کہا ہے کہ ریحانہ کے اس ٹویٹ کے بعد سچن تندولکر ، لتا منگیشکر ، وراٹ کوہلی سمیت بڑے اسٹارزکے ٹویٹس ہیں۔ان میں سے بہت سے مشترک الفاظ ہیں جیسے ۔اسی کے ساتھ ہی ، سائنا نہوال اور اکشے کمار کی ٹویٹ بھی بہت ملتی جلتی ہے۔ ان تمام ٹویٹس کے اوقات اور طرز کو دیکھ کر ایسا لگتا ہے کہ بی جے پی حکومت کے دباؤ میں ان ستاروں نے ٹویٹ ضرورکیاہوگا۔