ترکی نے عرب لیگ کی منظور کردہ قرارداد کو مسترد کردیا

انقرہ:ترکی نے عرب لیگ کے وزرائے خارجہ کونسل نے اجلاس میں ترکی کے خلاف لئے گئے فیصلوں کو یکسر مسترد کرنے کا اعلان کیا ہے۔ وزارت خارجہ کی جانب سے جاری کردہ تحریری بیان میںکہا گیا ہے کہ 3 مارچ 2021 کو عرب لیگ کے وزرائے خارجہ کونسل کے اجلاس میں ترکی کے خلاف کیے گئے بے بنیاد فیصلوں کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں۔تحریری بیان میں کہا گیا ہے کہ ان فیصلوں سے عرب عوام کی کوئی نمائندگی نہیں ہے۔عرب لیگ کے اراکین بخوبی واقف ہیں کہ کچھ تباہ کن سرگرمیوں کو چھپانے کے لئے ترکی پر الزام تراشیاں کررہے ہیں جن کی عرب عوام کی نظر میں کوئی ہم اہمیت نہیں ہے۔تحریری بیان میں متعدد اراکین کی جانب سے ان فیصلوں پر اعتراض کئے جانے کی بھی نشاندہی کی گئی ہے کونسل نے اعتراضات کے باوجود شفاف مذاکرات کے عمل کے بغیر مختلف ممالک کے بیانیہ کو جگہ دی ہے۔ تحریر اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ترکی ، دنیا اور خطے میں اپنے اصولی اور مستحکم موقف، سلامتی ، امن اور استحکام کی بحالی کے لئے سب سے زیادہ کوششیں کرنے والے ممالک میں سر فہرست ہے۔ ترکی خطے میں عرب ممالک کی خودمختاری کے تحفظ اور علاقائی سا لمیت کو ہمیشہ ہی ترجیح دیتا چلا آیاہے اور وہ خطے میں علاقائی سا لمیت اور اتحاد و یکجہتی کی ضرورت پر زور دیتا چلا آیا ہے۔ تحریری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ عرب لیگ ترکی پر بے بنیاد الزامات لگانے کی بجائے عرب عوام کے امن ، خوشحالی اور فلاح و بہبود کو ترجیح دے اور خطے میں سلامتی اور استحکام کے قیام میں تعمیری شراکت کرے۔