ٹی آر پی گھوٹالہ:ریپبلک چینل کے سی ای او وکاس چندانی ممبئی میں گرفتار

ممبئی:ٹی آر پی اسکیم معاملے میں ریپبلک ٹی وی کے سی ای او وکاس خانچندانی کو گرفتار کیاگیا ہے۔ خانچندانی کو اتوار کی صبح ممبئی پولیس نے گرفتار کیا ۔ اس معاملے میں اب تک 13 افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔ ممبئی پولیس نے اس معاملے میں 6 اکتوبر کو ایف آئی آر درج کی تھی اور ہنسا ریسرچ کے افسر نتن دیوکر کی شکایت کے بعد تحقیقات کا آغاز کیا تھا۔ ممبئی پولیس نے نومبر میں یہاں کی ایک عدالت میں مبینہ ٹی آر پی گھوٹالہ میں چارج شیٹ داخل کی تھی۔پولیس کی کرائم انٹیلی جنس یونٹ (سی آئی یو) ٹیلیویژن ریٹنگ پوائنٹ (ٹی آر پی) مبینہ گھوٹالہ کی تحقیقات کر رہا ہے۔ کرائم برانچ اس سے قبل اس معاملے میں ریپبلک ٹی وی کے ڈسٹری بیوشن ہیڈ سمیت 12 افراد کو گرفتار کرچکی ہے۔ جعلی ٹی آر پی گھوٹالہ گزشتہ مہینے اس وقت منظر عام پر آیا جب ریٹنگ ایجنسی براڈکاسٹ آڈوئین ریسرچ کونسل (بی اے آر سی) نے ہنسا ریسرچ گروپ کے ذریعہ ایک شکایت درج کی تھی جس میں یہ الزام لگایا گیا تھا کہ کچھ ٹیلی ویژن چینلز نے ٹی آر پی کے اعداد و شمار میں ہیرا پھیری کی ہے۔ ہنسا رکو یہ ذمہ داری دی گئی تھی کہ وہ ناظرین کا ڈیٹا (کتنے ناظرین کون سا چینل دیکھ رہے ہیں کتنے عرصے سے دیکھ رہے ہیں ) ریکارڈ کرنے کے لیے پیمائش کا آلہ انسٹال کریں۔اس سے قبل پولیس ذرائع کے مطابق درجہ بندی میں ہیرا پھیری کے معاملے میں کچھ ناظرین نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں ریپبلک ٹی وی کو آن رکھنے کے لیے رقم کی ادائیگی کی گئی تھی، گرچہ وہ اسے نہ دیکھ رہے ہوں۔ دوسری طرف ریپبلک ٹی وی نے خود ان پر اس الزامات کو بے بنیاد قرار دیا تھا۔ ٹی آر پی گھوٹالے کی ابتدائی تفتیش میں دو مقامی چینلز، فکت مراٹھی اور باکس سنیما کے نام کا انکشاف ہواتھا۔