تریپورہ میں انفیکشن کے معاملوں میں اضافہ

اگرتلا:وزیراعلی بپلو کمار دبے کے تریپورہ کو کورونا وائرس فری قرار دینے کے کچھ دن بعد ریاست میں انفیکشن کے معاملات میں اضافہ دیکھنے کو ملا اور دو مئی سے ایک ہفتے کے اندر ریاست میں 130 لوگ متاثر پائے گئے ہیں۔یہ تمام معاملے دھلائی ضلع کی بی ایس ایف کی دو بٹالین کے ہیں۔موجودہ صورتحال کو ذہن میں رکھنے ہوئے ریاستی حکومت نے دھلائی ضلع کو ریڈ زون اور بٹالین ہیڈکوارٹر، گندچیررا میں بیس کیمپ، بنگلہ دیش کی سرحد سے متصل کرینہ اور کمل پور قصبوں سمیت پانچ مقامات کومتاثرہ علاقے قرار دیا ہے۔ انفیکشن کے معاملوںپر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ایڈیشنل چیف سیکرٹری ایس کے راکیش نے کہاکہ معاملات میں اچانک اضافہ ہوا ہے۔ہم امید کر رہے ہیں کہ انفیکشن آگے نہیں پھیلے گا کیونکہ یہ بی ایس ایف بٹالین کے ہیڈ کوارٹر تک پھیلا ہوا ہے۔تاہم ہم کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار ہیں۔فی الحال حکومت جی بی پنت اسپتال میں سہولیات کو اپ گریڈ کر رہی ہے۔واضح رہے کہ دو مئی کو بی ایس ایف کے دو جوانوں میں انفیکشن کی تصدیق ہوئی تھی۔اس کے اگلے ہی دن 12 اور نوجوان متاثر پائے گئے۔اسی طرح اگلے کچھ دنوں تک متاثرہ مریضوں کی تعداد بڑھتی رہی۔فی الحال تریپورہ میں 132 متاثرہ لوگ زیر علاج ہیں۔چیف سکریٹری بر کمار ساہو نے بی ایس ایف کے تریپورہ فرنٹیر آئی جی سولومن مج کو لکھے خط میں حال ہی میں ہوئے کورونا وائرس انفیکشن کے معاملوںکی جانچ کے لئے کہا تھا۔