بنگال انتخابات:ترنمول کانگریس کے 291 امیدواروں کی فہرست جاری، 42 مسلمان شامل

کولکاتا:مغربی بنگال اسمبلی انتخابات کے لیے امیدواروں کے نام کا اعلان کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے جمعہ کے روز اعلان کیا کہ وہ اپنے روایتی اسمبلی حلقے سے انتخاب نہیں لڑیں گی بلکہ نندی گرام سے انتخاب لڑیں گی اور بھوانی پور سے ریاستی وزیر شوبھن دیب چٹوپادھیائے انتخاب لڑیں گے۔ممتا بنرجی نے 291 امیدواروں کی فہرست جاری کر دی ہے۔ ٹی ایم سی کی فہرست میں کم از کم 100 چہرے ایسے ہیں جنہیں پہلی مرتبہ موقع فراہم کیا جا رہا ہے۔ ٹی ایم سی پہلی پارٹی ہے جس کی جانب سے امیدواروں کے ناموں کا اعلان کیا گیا ہے، ان میں 50 خواتین اور 42 مسلم امیدوار بھی شامل ہیں۔حال ہی میں پارٹی میں شامل ہونے والے سابق کرکٹر منوج تیواری ہاوڑا کے شیوپور سے انتخابی میدان میں اتریں گے۔ بھوانی پور سیٹ سے شوبھن دیب چٹوپادھیائے انتخابی میدان میں رہیں گے۔ اس کے علاوہ بانکورا سے فلم اسٹار سیان تیکا اور اترپاڑا سے کنچن ملک کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔ممتا بنرجی نے اس مرتبہ 50 خواتین کو ٹکٹ دیا ہے۔ 79 ایس سی اور 17 ایس ٹی کو بھی ٹکٹ دیا ہے۔جبکہ 42 مسلم امیدواروں کو بھی ٹکٹ دیا گیا ہے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ دارجلنگ، کالمپونگ اور کرسیانگ سے گورکھا جن مکتی مورچہ کے امیدوار اعلان کریں گے۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ میں جو بولتی ہوں اس پر قائم رہتی ہوں، میں نے نندی گرام سے انتخاب لڑنے کا اعلان کیا تھا اور وہیں سے انتخاب لڑوں گی۔ممتا بنرجی نے کہا کہ ان کی پارٹی سے کسی بھی 80 سال عمر سے اوپر کے لوگوں کو ٹکٹ نہیں دیا گیا ہے۔ میں نے بہت سے دوستوں کو ٹکٹ نہیں دیا ہے میں ان لوگوں کی شکر گزار ہوں۔ جن اہم امیدواروں کو ٹکٹ دیا گیا ہے ان میں سابق آئی پی ایس آفیسر ہمایوں کبیر، کرکٹرمنوج تیواری ودیگر شامل ہیں۔ممتا بنرجی نے کہا کہ وہ پارٹی کے سینئر لیڈروں کو ٹکٹ نہیں دے پا رہی ہیں، کیوںکہ پارٹی میں کئی نئے چہروں کو ا?گے لانا تھا۔ اس لئے کئی سینئر لیڈروں کو ٹکٹ نہیں دیا جا رہا ہے۔ اگر ان کی پارٹی اقتدار میں ا?ئے گی تو وہ ودھان پریشد کی تشکیل دیں گی تو وہاں پارٹی کے سینئر لیڈروں کو امیدوار بنائے گی۔ خیال رہے کہ دسمبر میں شوبھندو ادھیکاری کے بی جے پی میں شامل ہونے کی وجہ سے ممتا بنرجی نے نندی گرام سے انتخاب لڑنے کا اعلان کیا تھا۔