تلنگانہ سکریٹریٹ مساجدکی شہادت:اویسی ومولانا خالد سیف اللہ رحمانی سمیت مسلم نمایندوں کی وزیراعلیٰ سے ملاقات ،کے سی راؤنے جلدتعمیر کروانے کا یقین دلایا

حیدرآباد:تلنگانہ سکریٹریٹ میں مساجدکی شہادت کے خلاف مسلمانوں میں زبردست غصہ ہے۔وزیراعلیٰ سے تعلقات کی وجہ سے لوگ اویسی پربھی سوال اٹھارہے ہیں۔مسلم تنظیموں اورعام مسلمانوں کی طرف سے سخت دبائوکے بعدآج مسلم نمائندوں کے ایک وفدنے تلنگانہ کے وزیراعلیٰ کے چندرشیکھررائوسے ملاقات کی ۔ان میں اسدالدین اویسی کے علاوہ مسلم پرسنل لا بورڈکے سکریٹری اورترجمان مولاناخالدسیف اللہ رحمانی بھی شامل رہے۔سی ایم کے چندرشیکھر رائونے سیکرٹریٹ کے احاطے میں دونوں مساجد (جامع مسجد اور مسجد ہاشمی) کی تعمیر نو پراتفاق کیاہے۔مسجد کی شہادت سے قبل جہاں وہ 7 جولائی 2020 سے پہلے موجود تھیں،وہیں تعمیر کی جائے گی۔انہوں نے اکتوبرکے پہلے ہفتہ میں اس کا سنگ بنیاد رکھنے کا تیقن دلایاہے۔وزیراعلیٰ کہاہے کہ جولائی سے پہلے کی جگہ پر تعمیر نو کریں گے۔ اس کے علاوہ 2 مساجد کے درمیان واقع 1500 مربع گزکوبھی الاٹ کیا جائے گا، اورسیکریٹریٹ کے احاطہ میں مندر اور چرج کی تعمیر بھی عمل میں آئے گی ۔بیرسٹر اسد الدین اویسی رکن پارلیمنٹ کی سربراہی میں ایک وفدنے وزیراعلیٰ سے ملاقات کی۔جس میں مختلف مسلم تنظیموں کے نمائندے اور آل انڈیا مسلم پرسنل لابورڈ کے ممبران بھی شریک رہے۔