تیجسوی سوریہ پرویکسین سے کمائی کاالزام،کانگریس نے رکنیت منسوخ کرنے کی اپیل کی

نئی دہلی: کانگریس نے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ تیجسوی سوریہ اور ان کے چچا روی سبرامنیم پر ویکسین کے ذریعے رقم کمانے کا الزام عائد کیا ہے۔ کانگریس نے ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے اور انہیں ایم پی اور ایم ایل اے کے عہدے سے ہٹانے کامطالبہ بھی کیاہے۔ تاہم بی جے پی قائدین نے اس الزام کی تردید کی ہے۔ کانگریس کے ترجمان پون کھیڑا نے الزام لگایاہے کہ سوشل میڈیا کے ذریعہ لیک ہونے والی آڈیو ٹیپ کے مطابق سبرامنیم نے کرناٹک کے ایک نجی اسپتال میں ہر ٹیکے پر700 روپے رشوت لی ہے۔ انہوں نے الزام لگایاہے کہ سوریہ کو اشتہاروں میں اسپتال کی تشہیر کرتے ہوئے دیکھاگیاہے۔ کھیڑا نے کہاہے کہ پارلیمنٹ سے تیجسوی سوریہ کی رکنیت فوری طور پر منسوخ کردی جانی چاہیے۔ایم ایل اے روی سبرامنیم کی رکنیت بھی منسوخ کردی جانی چاہیے۔نجی اسپتال کے نگراں نے ایک شخص کو واضح طور پر بتایاہے کہ اسے ہر ٹیکے کے لیے 900 روپے ادا کرنے ہوں گے کیونکہ کرناٹک کے باساوانگڑی سے بی جے پی کے ممبر اسمبلی روی سبرامنیم کو700 روپے ادا کیے جائیں گے جو سوریہ کے چچاہیں۔پون کھیڑا نے کہاہے کہ یہ چونکا دینے والے انکشافات ہیں۔ یہ لال ہاتھ میں پکڑے جانے کی طرح ہے۔ اس ہفتے کے شروع میں بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ تیجسوی سوریہ نے اس اسپتال میں لوگوں کوویکسین دینے کے لیے اپنی تصویر کے ساتھ مہم چلائی ہے۔کانگریس لیڈر نے کہاہے کہ ہم وزیر اعظم سے پوچھنا چاہتے ہیں ۔ ہم اس کا جواب طلب کرتے ہیں کہ سرکاری اسپتالوں کی بجائے ویکسین کو نجی اسپتالوں میں کس طرح موڑا جارہاہے۔انہوں نے کہا ہے کہ سوریہ اور سبرامنیم کے خلاف ایف آئی آر درج کی جانی چاہیے۔