تیجسوی کا نتیش سے سوال:وزیر اعظم نے ڈی این اے پرجو سوال اٹھایاتھا، اس کی رپورٹ کا کیا ہوا؟

 

پٹنہ: قائد حزب اختلاف تیجسوی یادو نے زراعت بل کے بہانے مرکزی اور ریاستی حکومت کو نشانہ بنایا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ این ڈی اے کی ڈبل انجن حکومت کسان، مزدور اور نوجوان مخالف ہے۔ ملک بھر کے کسان تینوں زرعی بلوں کی مخالفت کر رہے ہیں جنہیں مرکزی حکومت لے کرآئی ہے۔ اس سے ناراض ہوکر مرکزی وزیر ہرسمرت کور بادل نے بھی اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیاتھا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اس بل سے بہار کے کسان بھی مایوس ہوگئے ہیں۔ آنے والے وقت میں بہار کے کسان ان سے چن چن کر بدلہ لیں گے۔ تیجسوی یادو نے نائب وزیر اعلی سشیل کمار مودی پر بھی طنزکستے ہوئے کہا کہ ان کا کہنا ہے کہ کچھ بہاری تفریح کے لئے باہر جاتے ہیں۔ یہ کہہ کر سشیل مودی نے کسانوں، مزدوروں اور غریبوں کی توہین کی ہے۔ آنے والے وقت میں بہار کی عوام انہیں بھی سبق سکھائے گی۔اس کے علاوہ تیجسوی یادو نے پٹنہ کی سڑکوں پر پوسٹروں کے بہانے نتیش کمار اور وزیر اعظم مودی کو بھی نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ بہار کے لوگوں نے سن 2015 میں بال اور ناخن کیوںکٹوائے؟ انہوں نے نتیش کمار سے پوچھا کہ اس رپورٹ کا کیا ہواجس میں وزیر اعظم نے ڈی این اے پر سوال اٹھایاتھا؟۔تیجسوی یادو نے مزید کہا کہ نتیش جی وزیر اعظم کا چہرہ استعمال کررہے ہیں۔ نتیش جی مایوس ہوگئے ہیں، ایسی صورتحال میں اب ان کا سہارا لے رہے ہیں، ان کی حالت نازک ہوگئی ہے۔