تیسری لہر کے بحران کا خطرہ ،مگر حکومت کے پاس چو ّنی بھی نہیں : شیوراج سنگھ

بھوپال : سی ایم شیوراج سنگھ چوہان نے اجین میں تیسری لہر کے بارے میں تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کا خزانہ خالی ہے ، حکومت کے پاس چو ّنی تک نہیں ہے۔ تیسری لہر کا بحران برقرار ہے ، لیکن ٹیسٹنگ میں کوئی کمی نہیں رہنے دی جائے گی۔ روزانہ 75 ہزار ٹیسٹ ہوں گے۔ جو لوگ ماسک نہیں پہنتے ہیں ان کا معاشرتی بائیکاٹ کیا جائے گا۔ ڈیلٹا ، گاما اور زیکا سے طویل مدت تک جدوجہد کرنا ہوگا۔ریاستی عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ بے فکر نہ ہوں ۔ ایم پی کے وزیراعلیٰ شیوراج نے یہ باتیں کالی داس اکیڈمی میں تعمیراتی کاموں کے سنگ بنیاد کے موقع پر کہیں۔ انہوں نے کہا کہ در حقیقت اجین میں آج ایک نیا دور شروع ہو رہا ہے۔ اجین تعلیم، مذہب اور سائنس کےلیے مشہور ہے ،اب یہ شہر ہندوستان کےلیے فلکیات کے میدان میں ایک نئی تاریخ رقم کرے گا ، اس کا آغاز ڈونگلہ سے ہوگا۔ کرونا کے بارے میں انہوں نے کہا کہ ہماری لاپرواہی ہمارے لیے بھاری پڑے گی۔ اب ڈیلٹا پلس آگیا ہے۔ زیکا بھی آگیا ہے۔ ہم سب کا مقابلہ کرنا ہوگا،پوری دنیا اس سے جدو جہد کر رہی ہے ، لیکن میں اجین اور مدھیہ پردیش کے لوگوں سے ہاتھ جوڑ کر کہتا ہوں کہ وہ بے فکر نہ ہوں ،تیسری لہر کا بحران جاری ہے۔ سب کو محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ ہم اب مدھیہ پردیش میں روزانہ 75 ہزار ٹیسٹ کرائیں گے۔ہمیں صرف اس وائرس کے ساتھ طویل مدت تک رہنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ اجین میں بچوں کے لئے 50 بیڈ پر مشتمل ایک اسپتال تیار کیا گیا ہے۔ اجین سمیت ناگدا میں آکسیجن پلانٹ شروع کیا گیا ہے۔ میں تسلیم کرتاہوں کہ آکسیجن کا بہت بحران ہے۔ کرونا کے ایام میں پیسوں کی قلت ہے ، میں یہ بھی قبول کرتا ہوں کہ اس وقت خزانہ بالکل خالی ہے۔ ہمارے پاس چونی بھی نہیں ہے۔