تسلیم الدین کی سیاسی وراثت چھوٹے بیٹے کے سپرد،شاہنوازعالم ایم آئی ایم سے کامیاب

پٹنہ:بہارکے سیمانچل کی سیاست تسلیم الدین کے آس پاس ہی رہی ہے۔ اب تسلیم الدین نہیں رہے اور ان کے دونوں بیٹے اپنی سیاسی میراث پرکنٹرول کرنے کے لیے میدان میں اترے تھے۔ تسلیم الدین کے بڑے بیٹاسرفراز عالم آر جے ڈی کے ٹکٹ پر اترے لیکن حیدرآبادی بریانی حاوی رہی اورایم آئی ایم کے ٹکٹ پرچھوٹے بیٹے شہنوازعالم نے جیت حاصل کی ہے۔جوکی ہاٹ خطے کے عوام کی جانب سے تسلیم الدین کی میراث کے اصل وارث چھوٹے بیٹے شاہنواز عالم کے طورپرسامنے آئے ہیں اور وہ جیت گئے ہیں۔جوکی ہاٹ اسمبلی سیٹ پر آر جے ڈی سے سرفراز عالم اور بی جے پی سے رنجیت یادو میدان میں تھے جبکہ شاہنواز عالم اے آئی ایم سے اپنی قسمت آزما رہے تھے۔ اس نشست پرجے ڈی یواوراے آئی ایم آئی ایم کے مابین مرکزی مقابلہ رہا ہے۔ اویسی کی جماعت سے تعلق رکھنے والے شاہنواز عالم نے کامیابی حاصل کی ہے ، جبکہ تسلیم الدین کے بڑے بیٹے سرفراز عالم دوسرے نمبر پر تھے۔ بی جے پی کے امیدوار رنجیت یادو تیسرے نمبر پر رہے۔تسلیم الدین خاندان کاسیاسی تسلط پانچ دہائیوں سے ضلع ارریہ کی جوکی ہاٹ اسمبلی سیٹ پرقائم ہے۔ جوکی ہاٹ سیٹ 1967 سے 2018 تک 15 بار لڑی جا چکی ہے۔ اس میں10 بارتسلیم الدین اور ان کے بیٹے یہاں سے جیت گئے۔ تسلیم الدین خود اس نشست سے پانچ بار ایم ایل اے رہے ہیں ، جبکہ ان کے بڑے بیٹے سرفراز چار بار اسمبلی میں کامیاب ہوئے۔ فی الحال تسلیم الدین کے چھوٹے بیٹے شاہنواز عالم ایم ایل اے ہیں ، جنہوں نے پہلی بار 2018 کے ضمنی انتخاب میں کامیابی حاصل کی اور ایک بار پھر اسمبلی میں کامیابی حاصل کی ہے۔