تمام پرائیویٹ ڈاکٹرس کو کرنا ہوگا سرکاری اسپتال میں کام

حکم نہیں ماننے پر منسوخ ہوگا لائسنس
ممبئی:ملک میں جان لیوا کورونا وائرس نے سب سے زیادہ تباہی مہاراشٹر میں مچارکھی ہے۔اکیلے مہاراشٹر میں اس وائرس سے اب تک تقریباً 700 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ ریاست میں سب سے زیادہ کیس دارالحکومت ممبئی سے سامنے آرہے ہیں۔ ایسے میں میڈیکل ایجوکیشن اور تحقیق ڈائریکٹوریٹ نے آج پرائیویٹ ڈاکٹرس کے لئے اب سرکاری اسپتال میں بھی کام کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔میڈیکل ایجوکیشن اور تحقیق ڈائریکٹوریٹ نے ممبئی میں جتنے بھی پرائیویٹ ڈاکٹر ہیں، انہیں اب سرکاری اسپتال میں کام کرنا لازمی کر دیا ہے۔ بڑی بات یہ ہے کہ اگر کسی بھی پرائیویٹ ڈاکٹر نے اس حکم کو نظر انداز کیا تو ان کا لائسنس منسوخ کر دیا جائے گا۔ ممبئی میں تقریباً25 ہزار پرائیویٹ ڈاکٹرس اور ہیلتھ ورکرس ہیں۔آرڈر میں ذاتی ڈاکٹرس اور طبی حکام کو کورونا وائرس اسپتالوں میں کم از کم 15 دنوں کے لئے کام کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔وزارت صحت کے مطابق مہاراشٹر میں اب تک 15 ہزار 525 معاملے سامنے آ چکے ہیں۔ وہیں اب تک 617 لوگوں کی موت ہو چکی ہیں۔ ریاست میں دو ہزار 819 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں۔