طالبان کا جنگ کے خاتمے کا اعلان، کابل ایئرپورٹ پر ملک سے فرار ہونے والے افغان عوام کی بھیڑ 

 

کابل:امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے اتوار کو جاری کردہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ جو اقتدار میں ہیں اور جن کے پاس اختیار ہے ان پر اس بات کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ انسانی جانوں اور املاک کے تحفظ کو یقینی بنائیں اور وہی اس کا حساب بھی دیں گے۔امریکہ، برطانیہ، آسٹریلیا، قطر اور نیوزی لینڈ سمیت 65 ملکوں نے مشترکہ اعلامیے میں مطالبہ کیا ہے کہ غیر ملکیوں اور ان افغان شہریوں کو محفوظ انداز میں ملک چھوڑنے کی اجازت دی جائے جو اپنی خوشی سے بیرونِ ملک جانا چاہتے ہیں۔ امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے اتوار کو جاری کردہ مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ افغانستان میں جو اقتدار میں ہیں اور جن کے پاس اختیار ہے ان پر اس بات کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ انسانی جانوں اور املاک کے تحفظ کو یقینی بنائیں اور وہی اس کا حساب بھی دیں گے۔ مشترکہ بیان میں افغانستان میں فوری طور پر سیکیورٹی اور امن و عامہ کی صورتِ حال کی بحالی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔بیان میں میں کہا گیا ہے کہ ملک چھوڑنے کے خواہش مند افغان عوام اور غیر ملکی شہریوں کو انخلا کی اجازت دی جائے جب کہ سڑکیں، ہوائی اڈے اور سرحدی گزرگاہوں کو کھلا رکھنے کو یقینی بنایا جائے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ افغان عوام محفوظ، پرامن اور باعزت زندگی گزارنے کے مستحق ہیں۔ عالمی برادری افغان عوام کی مدد کرنے کے لیے ان کے ساتھ کھڑی ہے۔