تبلیغی جماعت:ہائی کورٹ نے 14 ممالک کے شہریوں کی رہاکرنے کاحکم جاری کیا

نئی دہلی:دہلی کی ایک عدالت نے 14 ممالک سے غیر ملکی شہریوں کے ذریعہ’پلی بارگیننگ‘ عمل کے تحت ہلکے الزامات قبول کرنے پر علیحدہ علیحدہ جرمانہ ادا کرنے کے بعد انہیں رہاکرنے کی اجازت دے دی۔ کووڈ19 کو روکنے کے لئے لاک ڈاؤن کے دوران ویزا کے ضوابط سمیت متعدد دفعات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے تبلیغی جماعت کے پروگرام میں حصہ لینے پر مقدمات درج کئے گئے تھے۔ وکیل نے کہا کہ پانچ ممالک کے غیر ملکیوں نے عدالت کے روبرو کیس کا سامنا کرنے کی بات کہی ہے۔ میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ ہمانشو نے الجیریا، بلجیم، برطانیہ، مصر اور فلپائن کے غیر ملکی شہریوں کو ہر ایک کو دس ہزار روپے جرمانہ ادا کرنے کے بعد رہا کرنے کی اجازت دے دی۔ ایک اور میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ آشیش گپتا نے سوڈان کے پانچ شہریوں کو ہر ایک کو پانچ ہزار روپے جرمانہ ادا کرنے کے بعد رہا کرنے کی اجازت دے دی۔ میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ پارس دلال نے چین، مراکش، یوکرین، ایتھوپیا، فیجی، آسٹریلیا، برازیل، افغانستان کے شہریوں کو پانچ ہزارروپے جرمانے کی ادائیگی پر رہا کرنے کی اجازت دی۔ ان کی رہائی کی اجازت اس وقت دی گئی جب ان کی درخواست پرلاجپت نگر کے ڈویژنل مجسٹریٹ، اس معاملے میں شکایت کنندہ، لاجپت نگر کے ایڈیشنل کمشنر پولیس انسپکٹر نظام الدین نے جب کہا کہ انہیں کوئی اعتراض نہیں ہے،تاہم، سوڈان، اردن، امریکہ، روس، قزاقستان اور برطانیہ سے تعلق رکھنے والے دو تارکین وطن نے ہلکے الزامات کو قبول نہیں کیا اور کہا کہ وہ مقدمے کا سامنا کرنے کیلئے تیارہیں۔ ملزمان کی جانب سے پیش ہوئے وکیل عاشمہ منڈلا، منداکنی سنگھ، فہیم خان اور احمد خان نے اس کے بارے میں بتایا۔