تب بھی یہ درست نہیں تھا ایس پی صاحب! – عبدالغفارسلفی 

 

یو پی کے شہر میرٹھ کے ایک مسلم علاقے میں وہاں کے سٹی ایس پی صاحب کا ویڈیو سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہوا جس میں وہ سی اے اے اور این آر سی کا احتجاج کرنے والے مسلم نوجوانوں کو پاکستان جانے کا مشورہ دے رہے تھے، گالیاں اور دھمکیاں دے رہے تھے، بعد میں جب اس ویڈیو کو لے کر واویلا ہوا تو ایس پی صاحب نے وضاحتی بیان دیا کہ چونکہ وہ نوجوان پاکستان زندہ باد کے نعرے لگا رہے تھے اس لیے انہیں ایسی زبان استعمال کرنی پڑی ـ سوال یہ ہے کہ اگر وہ نوجوان ایسا نعرہ لگا رہے تھے تو جیسے آپ کی گالیاں اور دھمکیاں ریکارڈ میں آئیں وہ نعرہ ریکارڈ کیوں نہیں ہوا؟آپ کی گالیوں اور دھمکیوں کا تو ثبوت موجود ہے، ان نوجوانوں نے یہ نعرہ لگایا اس کا کیا ثبوت ہے؟ دوسرے یہ کہ اگر انہوں نے ایسا نعرہ لگایا تو یقیناً غلط کام کیا، قانون کی خلاف ورزی کی، آپ ان کے خلاف قانونی کارروائی کرتے، اس کا یہ جواب تو نہیں تھا کہ آپ اس پوری "گلی” کو نشانے پر لے لیں، کالی پٹی باندھنے والوں کا فیوچر کالا کرنے کی دھمکی دیں، ایک مخصوص مذہب اور طبقے کے لوگوں کو نشانہ بنائیں،ان سب سے اگر کچھ ثابت ہوتا ہے تو وہ آپ کی وردی کے پیچھے چھپی آپ کی متعصب ذہنیت ثابت ہوتی ہے، آپ کے دل و دماغ میں پل رہی مسلم دشمنی سامنے آتی ہےـ

بہرحال اس پورے واقعے سے یہ بات بھی پایۂ ثبوت کو پہنچی کہ یوگی کی پولیس کس انداز میں کام کر رہی ہے، جس ریاست میں محافظ ہی قاتل بن جائیں، رکشک ہی بھکشک بن جائیں تو ایسی ریاست کا اللہ ہی خیر کرےـ افسوس اس بات کا بھی ہے کہ سنگھی ذہنیت کے لوگ ایس پی صاحب موصوف کو سوشل میڈیا پر خوب مبارکبادیں دے رہے ہیں، انہیں ایسے ہی پاکستان نوازوں کو سبق سکھانے کی تلقین کر رہے ہیں، نیز ایس پی صاحب کے پروموشن کا بھی مطالبہ کر رہے ہیں اور کچھ بعید نہیں کہ ہمارے وزیر اعلی صاحب ایسے متعصب پولیس آفیسر کی اس نفرت آمیز حرکت کے بدلے جلد ہی انہیں شاباشی، تمغوں اور انعامات سے نواز دیں ـ

ملک بہت تیزی سے ہندو راشٹر کی طرف بڑھ رہا ہے، مسلم دشمنی کو راشٹرواد کے خوبصورت لبادے میں پیش کیا جا رہا ہے، ملک کی نام نہاد سیکولر طاقتیں اگر اب بھی نہ جاگیں، تو جلد ہی نہ تو ملک کا سیکولر تانا بانا رہے گا، نہ دستور باقی رہے گا، نہ جمہوریت بچے گی، یاد رکھیں نفرت اور تعصب کی یہ آگ صرف مسلمانوں کو ہی نہیں جلائے گی، یہ سارے ملک کو کھا جائے گی، ملک کا امن چین سب بھسم کر دے گی ـ

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*