سدرشن ٹی وی شو پرسماعت 2 ہفتوں تک ملتوی،سپریم کورٹ کے ججوں نے حلف نامہ نہیں پڑھا

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے سدرشن ٹی وی کے متنازعہ شو’بنداس بول‘ پرسماعت دوہفتوں کے لیے ملتوی کردی ہے۔ ججوں نے کہاہے کہ انہوں نے مرکزی حکومت کی طرف سے دائر حلف نامے کو نہیں پڑھا ہے۔ مرکز نے اپنے حلف نامے میں شوکے کچھ حصوں پرنظر ثانی اور تبدیلی کی اجازت دی ہے۔ اس کے ساتھ ہی مرکز نے سپریم کورٹ میں چینل کے شوبنداس بول کے بارے میں کہا ہے کہ یہ پروگرام ضابطے کی خلاف ورزی کرتا ہے اور اس کا طریقہ بھی اچھا نہیں ہے۔ اس سے فرقہ وارانہ جذبات پھیل رہے ہیں۔ مرکز نے یہ بھی کہا ہے کہ اس شو کو مزید تبدیلیوں کے بغیر ٹیلی کاسٹ نہیں کیا جاسکتا۔ مرکز نے سپریم کورٹ میں جواب داخل کرکے ، 4 نومبر کو وزارت اطلاعات نشریات کے اس حکم کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ براڈ کاسٹر کے تمام حقوق اور حالات کے مابین توازن کودیکھنے اورتمام حقائق کو مدنظر رکھتے ہوئے فیصلہ کیاگیا ہے۔ کہاگیاہے کہ سدرشن ٹی وی کومستقبل میں پروگراموں کواحتیاط سے نشر کرناچاہیے۔حکم نامے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اگر پروگرام کے قوانین کی مزید خلاف ورزی ہوئی تو سخت کارروائی کی جائے گی۔ 15 ستمبر کو ، جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ ، اندو ملہوترا اور کے ایم جوزف پر مشتمل بنچ نے بنداس بول شو کے باقی ایپیسوڈ پر روک لگا دی۔شو میں دعویٰ کیاگیاتھاکہ سول سروس میں مسلمان دراندازی کررہے ہیں۔ بینچ نے یہ بھی کہاہے کہ اس پروگرام کا مقصد مسلمانوں کو نشانہ بنانا ہے۔ 26 اکتوبر کو سالیسیٹر جنرل تشارمہتانے کہاہے کہ وزارت اپنے تمام ریکارڈ اپنے پاس رکھے گی۔