سیاحت اورٹریول سیکٹر کو 5 لاکھ کروڑ روپے کا نقصان:رپورٹ

نئی دہلی:کورونا وائرس کی وبا نے گھریلوسیاحت اور ٹریول سیکٹر کی پوری سپلائی چین توڑ دیا ہے۔ کنڈیڈریشن آف انڈین انڈسٹری اورہاسپٹلٹی کنسلٹنسی کمپنی ہوٹلائیوٹ کی ایک رپورٹ کے مطابق اس شعبے کو 5 لاکھ کروڑ روپئے ، یا 65.57 بلین ڈالرکانقصان اٹھاناپڑاہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ صرف منظم سیاحت کے شعبے کو 25 ارب کا نقصان اٹھاناپڑا ہے۔ یہ اعدادوشمار تشویشناک ہیں اور اپنے وجود کو بچانے کے لیے صنعت کو فوری امداد کی ضرورت ہے۔اس رپورٹ کے مطابق یہ ہندوستانی سیاحت کے شعبے کو درپیش سب سے بڑے بحرانوں میں سے ایک ہے۔ اس نے گھریلو،اندرونی اور بین الاقوامی ہر قسم کی سیاحت کو متاثر کیاہے۔توقع کی جا رہی تھی کہ مارکیٹ میں لاک ڈاؤن اور نرمی کااثراکتوبر تک ہی ہوگا۔ لیکن اب اعداد و شمار کسی اور چیز کی نشاندہی کرتے ہیں۔ موجودہ رجحان کے مطابق اگلے سال کے آغاز تک ، ہوٹلوں میں کم و بیش 30 فیصد کمرے ہی بھرنا شروع ہوں گے۔ اس سے ہوٹل کی آمدنی میں 80 سے 85 فی صدتک کمی ہوگی۔تحقیق کے مطابق جنوری کے مصروف ترین وقت کے دوران ہوٹلوں میں 80 فیصد کمرے بھرے تھے۔ یہ فروری میں 70 فیصد ، مارچ میں 45 فیصد اور اپریل میں سات فیصد رہ گیا۔ مئی ، جون ، جولائی اور اگست میں شرحیں بالترتیب 10 فیصد ، 12 فیصد ، 15 فیصد اور 22 فیصدتھیں۔ ستمبرمیں 25 فیصد ، اکتوبر میں 28 فیصد ، نومبرمیں 30 فیصد اور دسمبر میں 35 فیصد تک بڑھنے کاامکان ہے۔