شعبۂ اردو چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی میں یوم ہندی کے موقع پر پروگرام کا انعقاد

ہندوستان کی دیگر زبانوں کو ساتھ لے کر چلنے میں ہی ہندی کا فروغ ممکن ہے:پروفیسر اسلم جمشید پوری

میرٹھ:(پریس ریلیز)شعبہ اردو چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی کے پریم چند چند ہال میں ”یوم ہندی” کا انعقاد کیا گیا۔ پروگرام کا آغازناظم جلسہ ڈاکٹر الکا وشسٹھ کے اظہار خیال سے ہوا ۔ انہوں نے ہندی کی مقبولیت اور تاریخ پر روشنی ڈالی۔ پروگرام کی صدارت پروفیسر اسلم جمشید پوری نے کی۔ انہوں نے اس موقع پر کہا کہ ہمارے پاس ہندی کے لئے صرف ایک دن ہی نہیں ہونا چاہیے بلکہ ہمیں ہندی کے فروغ کے لیے 365 دن تیار رہنا چاہئے۔ نئی تعلیمی پالیسی کے تحت ہندی زبان کو یقینی طور پر اپنا مقام ملے گا۔ ہندی ہماری قومی زبان ہے، ہمیں اس پر فخر کرنا چاہئے۔ہندی کو سنسکرت کی جگہ ام اللسان کا کردار ادا کرنا چاہیے۔ ہندوستان کی دیگر زبانوں کو ساتھ لے کر چلنے میں ہی ہندی کا بڑے پیمانے پر فروغ ممکن ہے۔
شعبے کی ریسرچ اسکالر تسلیم جہاں نے ہندی زبان کی تشہیر کے حوالے سے اپنے خیالات پیش کیے۔ ڈاکٹر شاداب علیم نے کہا کہ ہندی کسی ایک طبقے یا حصے سے وابستہ نہیں ہوسکتی ہے۔ ہندی ہماری سرکاری زبان ہے، ہندی پر ہم سب کے مساوی حقوق ہیں۔ ڈاکٹر آصف علی نے کہا کہ ہندی کو قومی زبان بنانے میں جو بھی رکاوٹیں پیش آتی ہیں، اسے دیکھنے کی ضرورت ہے۔ قومی زبان کے عہدے پر رکھنے کے لئے اسے آسان بناکر لوگوں تک پہنچانا ہوگا۔ پروگرام کی نظامت ڈاکٹر الکا واشسٹھ نے کی۔ اس موقع پر شعبہء کے طالب علم صبا،سامعہ، محمد شمشاد، فیضان انصاری، سیدہ مریم، فرح ناز وغیرہ شامل رہے۔