شعبۂ اردو بنارس ہندو یونیورسٹی میں ادبی مجلہ ’ادب سلسلہ‘ کے افسانہ نمبر کا اجرا

وارانسی:اردو زبان و ادب کا معتبر رسالہ ’ادب سلسلہ ‘ کا تازہ خصو صی شمارہ ’ افسانہ نمبر‘ کا اجرا شعبۂ اردو بنارس ہندو یونیورسٹی کے سربراہ پروفیسر آفتا ب آفاقی کے ہاتھوں عمل میں آیا۔اس موقع پر پروفیسر آفاقی نے رسائل کی غرض و غایت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ ادبی رسائل کے مطالعے سے ہم معاصر ادبی رجحان اور رویوں سے نہ صرف واقف ہوتے ہیں بلکہ پختہ اور نئے اذہان کے علمی و ادبی شغف اور معیار سے بھی واقف ہوتے ہیں۔انھوں نے مزید کہا کہ ادب سلسلہ نے بہت کم وقت میں سنجیدہ ادبی حلقے میں اعتبار قائم کر لیاہے ۔یہ رسالہ جہاں اساتذہ کے مقالات و مضامین شائع کر رہا ہے وہیں نئے قلم کاروں کی نگارشات کو شامل کرکے ان کی ذہنی و فکری تربیت میں حصہ لے رہا ہے۔اس رسالے نے کئی اہم خصوصی شمارے شائع کئے ہیںجن کی حیثیت حوالہ جات کی ہے اور ریسرچ اسکالرز کے لئے اس کی اہمیت مسلم ہے۔پروفیسر آفاقی نے کہا کہ نئی نسل کو اس نوع کے رسائل کا مطالعہ کرنا چاہیے اور غورو فکر کر کے مضامین لکھنا چاہیے ۔اس کے لیے یہ ضروری ہے کہ کلاسیکی شعرو ادب کا بغور مطالعہ کیا جائے اور ممتاز قلم کاروں کی تحریریں پڑھی جائیں ۔
مدیر رسالہ سلیم علیگ نے شعبہ اردو بنارس ہندو یونیورسٹی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا مقصد اردو زبان و ادب کی ترویج و اشاعت کے ساتھ طلباکے اندر ادبی ذوق پیدا کرنا ہے ۔اس ضمن میں مختلف شعبوں کے اساتذہ نے میرا بھر پور تعاون کیا ہے ہم ان کے ممنون و مشکور ہیں۔اجرا کے اِس موقع پر شعبہ کے اساتذہ ڈاکٹر مشرف علی، ڈاکٹراحسان حسن، ڈاکٹر قاسم انصاری، ڈاکٹر رشی کمار شرما، ڈاکٹر عبدالسمیع ، رقیہ بانواور ڈاکٹر افضل مصباحی (ایم ایم وی)کے ساتھ رسرچ اسکالرزو طلبا میںز شمشیر علی، محمد صفیان، عبدالقادر، محمد اسلم، عاکف، عامر، آفتاب شاہ ،بلوندر سنگھ بلوریہ وغیرہ موجود تھے۔