شیو سینا کامرکز ی حکومت پر حملہ:ای ڈی اور سی بی آئی کو سرحد پربھیجنا چاہیے

ممبئی:مہاراشٹر کی حکمراں جماعت شیوسینا نے اپنی پرانی حلیف پارٹی بی جے پی کو نشانہ بنایا۔ مرکزی تحقیقاتی ایجنسیوں کے غلط استعمال کے الزامات پر شیوسینا نے بی جے پی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) اور سی بی آئی کو جموں و کشمیر میں داخل ہونے والے دہشت گردوں سے نمٹنے کے لئے سرحد پر بھیجنا چاہئے۔ شیوسینا نے کسان تحریک کے دوران کسانوں کے ساتھ غلط برتاؤ کرنے پر بھی بی جے پی کو نشانہ بنایا ہے۔ شیوسینا نے کہا کہ سردی کے موسم میں کسانوں پر واٹر کینن کا استعمال کرنا ظلم ہے۔شیو سینا نے گجرات میں سردار پٹیل کے مجسمے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ملک کے پہلے وزیر داخلہ سردار پٹیل نے برطانویوں کے خلاف کسانوں کی بہت سی تحریکوں کی قیادت کی۔ ان کا مجسمہ رو رہا ہوگا، یہ دیکھ کر کہ کسانوں کے ساتھ کیا سلوک کیا جارہا ہے۔شیوسینا نے اپوزیشن جماعتوں کے خلاف مرکزی ایجنسیوں کے غلط استعمال پر کہاکہ حکومت سمجھتی ہے کہ وہ حزب اختلاف کو روکنے کے لئے ای ڈی اور سی بی آئی کا استعمال کرسکتی ہے۔ ان ایجنسیوں کو اپنی بہادری ثابت کرنے کا موقع دیا جانا چاہئے۔ گولی ہر وقت کام نہیں کرتی۔ دہلی بارڈر پر کھڑے ہمارے کسانوں کو دہشت گرد کہا گیا ہے جب کہ دہشت گرد جموں و کشمیر کی سرحد سے داخل ہورہے ہیں۔ایسے وقت میں ای ڈی اور سی بی آئی کو سرحد پربھیجنا چاہئے۔اس کے علاوہ کوئی متبادل نہیں ہے۔ شیوسینا نے کہاکہ بی جے پی نہ صرف ملک کا ماحول خراب کررہی ہے بلکہ انارکی کو دعوت دے رہی ہے۔ خالصتان کا معاملہ ختم ہوچکا ہے اور اندرا گاندھی اور جنرل ارون کمار ویدیا اس کے لئے اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔ بی جے پی اس مسئلے کو واپس لانا اور پنجاب میں سیاست کرنا چاہتی ہے۔ اگر اس چنگاری کو اکسایا گیا تو یہ ملک کے لئے تباہ کن ہوگا۔