شکست کابدلہ لینے کے لیے ٹی ایم سی لیڈروں پرکارروائی کی جارہی ہے،کانگریس کا الزام

نئی دہلی:الیکشن میں شکست کے بعدلگاتاربی جے پی حملہ آورہے۔مغربی بنگال میں پرانے ناردا رشوت خوری کیس کے حوالے سے ایک بار پھر ہنگامہ آرائی شروع ہوگئی ہے۔ پیر کے روز مرکزی تفتیشی ایجنسی سی بی آئی نے ترنمول کانگریس کے کئی رہنماؤں کوگرفتار کیا ہے۔ اپنے اراکین اسمبلی پر ایجنسی کی کارروائی دیکھ کر وزیراعلیٰ ممتا بنرجی غصے میں خود سی بی آئی آفس پہنچ گئیں۔کانگریس کے رہنما ابھیشیک منو سنگھوی نے گرفتاریوں پر سوالات اٹھائے ہیں۔ انہوں نے ٹویٹ کیاہے کہ آخراچانک گرفتاری کیوں شروع کی؟ انہوں نے کہاہے کہ مغربی بنگال میں گرفتاریوں کے پیچھے مرکزی حکومت اور سی بی آئی کے غلط مقاصد دکھائے جاتے ہیں۔۔گرفتاری کی طاقت کا مطلب یہ نہیں ہے کہ آپ گرفتاری کے پابندہیں۔ ناردا ایک دہائی پرانا معاملہ ہے ۔معاملہ سپریم کورٹ میں بھی سامنے آیا ہے ، پھر گرفتاریوں کی کیا ضرورت تھی؟انہوں نے کہاہے کہ اس میں شدید شبہ ہے کہ گورنر ، جن کا تعصب پسندانہ رویہ واضح ہے ، کیا ان کی تحقیقات کو منظور کرنے کا اختیارہے ، کیوں کہ انھوں نے 2011 میں وزرا سے حلف لیاتھا؟ پھر اچانک 2021 میں گرفتار کیا گیا ؟ انتخابات میں ہارنے کی وجہ سے؟ بدلہ لینے کے لیے؟ الیکشن کے نتائج کو تبدیل کرنے کے لیے؟