شام ہوتے ہوتے لالٹین جلنے لگی ،مہا گٹھبندھن کی واپسی ،مقابلہ سخت

نئی دہلی:بہار قانون ساز اسمبلی انتخابات میں حکمران اور حزب اختلاف کے مابین مقابلہ جاری ہے۔ رجحانات کے مطابق حکمران این ڈی اے بھلے اکثریت کے لیے درکار 122 نشستوں کے آس پاس ہو، لیکن گرینڈ الائنس ، جو ایک وقت میں پیچھے رہ گیا تھا ، شام ہوتے ہوتے ایک بار پھر واپسی کی ہے۔ اس وقت کے رجحان کے مطابق این ڈی اے 121 اور آر جے ڈی کی سربراہی میں گرینڈ الائنس 113 نشستوں پر برتری حاصل کیےہوئے ہے۔ اگر ہم پارٹی کی صورتحال کے بارے میں بات کریں تو سب سے بڑی پارٹی کے لئے بی جے پی اور آر جے ڈی کے مابین مقابلہ ہے۔ اس وقت کے رجحانات کے مطابق بی جے پی 71 سیٹوں پر آگے ہے ، جبکہ آر جے ڈی 74 سیٹوں پر آگے ہے۔ یعنی اس وقت تیجسوی یادو کی پارٹی آر جے ڈی سب سے بڑی پارٹی بن کر ابھری ہے۔
گنتی کے رجحانات میں بی جے پی 71 سیٹوں پر آگے ہے اور اس نے ایک سیٹ پر کامیابی حاصل کی ہے۔ جبکہ اس کی حلیف جماعت جے ڈی یو 42 نشستوں پر برتری حاصل کر رہی ہے اور اس نے ایک نشست جیت لی ہے۔ ووٹوں کی گنتی میں ہم تین نشستوں پر اور 5 نشستوں پر وی آئی پی پارٹی بھی آگے ہے۔ گرینڈ الائنس سے آر جے ڈی 74 نشستوں پر آگے ہے اور اس نے ایک سیٹ جیت لی ہے۔ کانگریس 21 ، سی پی آئی 3 ، سی پی آئی مالے 12 نشستوں اور بھاکپا 3 نشستوں پر برتری حاصل کررہی ہے۔ بہوجن سماج پارٹی دو سیٹوں پر آگے ہے۔ 4 نشستوں پر اسد الدین اویسی کی پارٹی برتری حاصل کیےہوئی ہے۔ آزاد امیدوار 3 سیٹوں پر آگے ہیں۔
این ڈی اے سے علیحدگی اختیار کر کے اور الیکشن لڑنے والے چراغ پاسوان کا کھاتہ بھی نہیں کھلا ہے۔ ایل جے پی نے انتخابات میں جے ڈی یو امیدواروں کے خلاف اپنا امیدوار کھڑا کیا تھا۔ بی جے پی اور جے ڈی یو اتحاد نے اب تک 35.43 فیصد ووٹ حاصل کیے ہیں جبکہ آر جے ڈی کانگریس گرینڈ الائنس کو 32.13 فیصد ووٹ ملے ہیں۔ الیکشن کمیشن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ اس بار پولنگ اسٹیشنوں کی تعداد میں کوویڈ 19 کی وجہ سے اضافہ کیا گیا تھا جس کی وجہ سے ووٹوں کی گنتی میں تاخیر ہوسکتی ہے۔