سینئرصحافی انورحسین جعفری کے انتقال سے سیاسی وصحافتی حلقہ سوگوار

نئی دہلی:مظفر نگرکے بڈھانہ ضلع رہنے والے معروف صحافی انور حسین جعفری کی اچانک موت نے راجدھانی کے سیاسی و صحافتی حلقوں کو سوگوار کر دیا ہے ۔موصوف کی جمعرات کے سہ پہر حرکت قلب بند ہو جا نے سے موت واقع ہوئی ۔ وہ روزنامہ ’سچ کی آواز ‘کے ساتھ وابستہ تھے ،اسکے علاوہ مرحوم نے اردو کے دیگر اخبارات میں بیش بہاخدمات انجام دی ،ان کی حوصلہ افزائی کے لیے درجنوں سیاسی وسماجی تنظیموں نے انہیں ایوارڈ سے سرفراز کیا تھا۔ گزشتہ شب جعفرآباد میں انور حسین جعفری کی رہائشگاہ پردہلی اقلیتی کمیشن کے چیئر مین ذاکر خان منصوری ، سابق ایم ایل اے چودھری متین احمد،حج کمیٹی کے سابق صدر ڈاکٹر پرویز میاں ، معروف عالم دین مولانا جلال حیدر نقوی، مولانا جاوید احمد صدیقی قاسمی سمیت مختلف سیاسی وسماجی تنظیموںاور اخبار نویسوں ومیڈیاچینلوںسے وابستہ صحافیوں نے پہنچ کر پسماندگان بالخصوص ان کے چھوٹے بھائی شاعر وصحافی محمد انجم جعفری سے اظہار تعزیت پیش کی ۔آج انور جعفری کی تجہیز وتدفین ان کے آبائی وطن بڈھانہ میں ہزاروں سوگواروں کی موجودگی میں عمل آئی۔ نامہ نگار سے بات کرتے ہوئے بی جے پی اقلیتی مورچہ کے سربراہ محمد عرفان احمدنے کہاکہ وہ ایک منجھے ہوئے رپورٹر تھے،وہ بہت شائستہ تھے،مگر انہیں آسانی سے کبھی صرف نہیں کیا جاسکتا تھا ،انہیں شدت سے یا د کیا جائے گا۔دہلی اقلیتی کا نگریس کے صدر عبد الواحد قریشی نے کہاکہ انور جعفری کی اچانک رحلت کی خبر سن کر مجھے صدمہ ہواہے ، میں انہیںکئی برسوں سے جانتا تھا ، وہ ایک اچھے انسان تھے۔مجھے ابھی تک ان کے انتقال کایقین نہیں ہو رہا ہے ۔بزرگ صحافی ایم .ودو ساجداورانسانی حقوق کارکن ڈاکٹر فہیم بیگ نے اظہار افسوس کرتے ہوئے فیس بُک پر لکھا کہ انور جعفری کی اچانک موت کی خبر سن کر مجھے سخت صدمہ ہوا ہے ، اردو صحافت میں ان کا مستقبل روشن تھا۔رب تعالی انہیں جنت اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے ۔وہیں انور جعفری کے اچانک رحلت پر مختلف سیاسی وسماجی تنظیموں کے نمائندوں نے سوشل میڈیا کے ذریعہ اظہار تعزیت پیش کی ،جن میں پرانی دہلی کے سماجی کارکنان میں شیخ علیم الدین اسعدی ،محمد طیب ، شفیع دہلوی ، حاجی نواب الدین ، ڈاکٹر نفیس قریشی ، ڈاکٹرحکیم عزیر بقائی ، ڈاکٹر سردار خان، ایم .نفیس،محمد غفران آفریدی ،عارف اخلاق سمیت دیگر نے سینئر صحافی کے انتقال پر شدید افسوس کااظہارکیا اور مشترکہ طورپر کہاکہ وہ دہلی میں کام کر نے والے ایک باصلاحیت صحافی تھے ، ان کی کمی ہمیشہ محسوس کی جائیگی۔