’سیکولر ازم‘ ہندوستانی روایات کی عالمی شناخت میں بڑی رکاوٹ:یوگی

لکھنؤ:آئین سے سیکولرزم لفظ نکالنے کی وکالت بی جے پی لیڈرپہلے بھی کرتے رہے ہیں۔’ہندوراشٹر‘ ماننے والوں کے لیے یہ لفظ پہلے ہی ناقابل قبول رہاہے۔’ نوبھارت ٹائمز‘کے مطابق، اتر پردیش کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کہاہے کہ دنیا میں ہندوستان کی روایات کوتسلیم کرنے میں ’سیکولرازم‘ سب سے بڑاخطرہ ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہاہے کہ اس ذہنیت سے نکلنے اوراس سمت میں ٹھوس اقدامات کرنے کے لیے ’خالص اور صحتمند‘ کوششوں کی ضرورت ہے۔چیف منسٹر نے کمبوڈیا کے مشہور انگور واٹ ہیکل کمپلیکس کے دورے پر تبصرہ کیا اور ایک نوجوان سیاح گائیڈ کے ساتھ اپنی گفتگو کی ، جس میں انہوں نے وزیراعلیٰ کو بتایاہے کہ وہ بدھ مت سے ہیں لیکن بدھ مت کی ابتدا ہندو مذہب سے ہوئی ہے۔ کمبوڈیا میں نوجوان لڑکا جانتا ہے کہ وہ بدھ مت سے ہے لیکن یہ بھی جانتا ہے کہ بدھ مذہب کی ابتدا کہاں سے ہوئی ہے اور وہ اپنے جذبات کا اظہار کرسکتے ہیںلیکن اگر آپ ہندوستان میں بھی یہی بات کہتے ہیں تو بہت سے لوگ ’سیکولرزم‘ پر پریشانی میں پڑ جائیں گے۔ لفظ سیکولرازم ہندوستان کی صدیوں پرانی روایات کو فروغ دینے اور انہیں عالمی سطح پر تسلیم کرنے میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ ہمیں اس سے نکل کر بڑے پیمانے پر خالص اور صحتمند انداز میں اسے کرنے کی کوشش کرنی ہوگی۔