سیدشہنواز حسین ایم ایل سی امیدواربنائے گئے،نتیش کابینہ میں مل سکتی ہے جگہ

نئی دہلی:بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے سابق مرکزی وزیر سیدشہنواز حسین کو بہار قانون ساز کونسل بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پارٹی نے انہیں ضمنی انتخاب میں کونسل میں امیدوار بنایا ہے۔ سیدشہنواز حسین کا نام آج بہار کے بی جے پی ہیڈ کوارٹر سے جاری کردہ امیدواروں کی فہرست میں ہے۔ حسین اٹل بہاری واجپائی حکومت میں وزیر رہ چکے ہیں۔ وہ دو بار (2006 اور 2009) بھاگلپور سے رکن پارلیمنٹ رہ چکے ہیں۔ ایک بار (1999) لوک سبھا کے ممبر اسمبلی بھی کشن گنج سے منتخب ہوئے۔بہار قانون ساز کونسل کے لیے دو نشستوں پر ضمنی انتخابات ہونے ہیں۔ یہ دونوں سیٹیں بی جے پی رہنما سشیل کمار مودی اور بی جے پی کے قانون ساز کونسل کے رکن ونود نارائن جھا کے استعفیٰ دینے کے بعد خالی ہیں۔ رام ولاس پاسوان کے انتقال سے خالی ہوئی اس نشست پر ہونے والے ضمنی انتخاب میں سشیل کمار مودی راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ بن گئے ہیں ، جبکہ ونودنارائن جھا نے اسمبلی انتخابات میں کامیابی حاصل کی ہے۔ نامزدگی کی آخری تاریخ 18 جنوری تک ہے۔ کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 19 جنوری کو ہوگی۔ اگر ضرورت ہو ئی تو انتخابات 28 جنوری کو ہوں گے۔ خیال کیا جارہا ہے کہ آرجے ڈی ایک نشست پر اپنے امیدوار کھڑے کرے گی۔ تاہم یہ دونوں سیٹیں بی جے پی کے قبضے میں تھیں لیکن اب ضمنی انتخاب میں بی جے پی ایک سیٹ ہارسکتی ہے۔ آر جے ڈی کی طرف سے فی الحال امیدوار کے نام کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔اعدادکے لحاظ سے آر جے ڈی اتحادیوں کی مدد سے ایک نشست پر امیدوار کی فتح کا فیصلہ ہوسکتا ہے۔ ایسی صورتحال میں بی جے پی کے کھاتے سے ایک سیٹ کھو سکتی ہے۔