سعودی فلم آسکرمیں نمائندگی کے لیے نامزد

ریاض :سعودی عرب کی فلم اتھارٹی نے بہترین بین الاقوامی فلم کیٹیگری کے آئندہ آسکر مقابلے میں باضابطہ نمائندگی کے لیے فیچر فلم حد الطار کا انتخاب کیا ہے۔اس فلم کو سعودی کی طرف سے آسکر کے لیے پیش کیے جانے کا فیصلہ کمیٹی کے چیئرمین، فلم اتھارٹی کے ’سی ای او‘ عبداللہ آل عیاف، ہدایت کار حذیفہ المنصور، نقادہ اورہدایت کارہ ھنا العمیر، آرگنائزنگ کمیٹی کے ڈائریکٹر، ریڈ سی فیسٹیول کے پروڈیوسر محمد الترکی اور سعودی فلم فیسٹیول کے ڈائریکٹر احمد الملا شامل ہیں۔سعودی عرب کی طرف سے ’حد الطار‘ کی نامزدگی کے ساتھ یہ فلم باقی دنیا کی فلموں سے مقابلہ کرے گی۔ دیگر فلموں کی ایک لمبی فہرست میں حد الطار شامل ہوگی جو کئی مراحل سے گزرے گی۔ حتمی فہرست کا اعلان کرنے سے پہلے آسکر ایوارڈ دینے والی امریکن اکیڈمی آف سائنسز اینڈ آرٹس کے ذریعے منتخب کیا جائے گا۔ آسکر کمیٹی کی طرف سے ایوارڈ کے لیے فلموں کا انتخاب 27 مارچ 2022 کو لاس اینجلس میں کیا جائے گا۔یہ فلم پہلی بار قاہرہ فلم فیسٹیول میں دکھائی گئی تھی اوراس نے فیسٹیول میں خصوصی جیوری پرائز جیتا تھا۔ اسے سویڈش مالمو عرب فلم فیسٹیول میں بھی دکھایا گیا تھا اوراس کے اندر دکھائے جانے کے علاوہ بہترین ہدایت کار کا ایوارڈ بھی جیتا تھا۔ اس کے علاوہ حد الطار نے مملکت اور سعودی فلم فیسٹیول میں بہترین فیچر فلم کا ایوارڈ جیت رکھا ہے۔فلم کے ڈائریکٹرعبدالعزیز الشلاحی نے آسکرمیں سعودی عرب کی نمائندگی کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ مْجھے بہترین بین الاقوامی فلم کیٹیگری کے لیے آسکر کی دوڑ میں مملکت سعودی عرب کی نمائندگی کرنے پر خوشی اور فخر ہے۔ فلمیں ہم سے آگے نکل چکی ہیں۔اس کے بعد مزید فلمیں آئیں گی۔ اور سعودی سینما اپنے بنانے والوں کی خواہش کو سب سے بڑے فورمز تک پہنچا دے گا۔