ساہتیہ اکادمی ادبی ایوڈرز 2020 :ادبی ایوارڈ کے لیے حسین الحق،ادب اطفال کے لیے حافظ کرناٹکی اوریووا پرسکار کے لیے ثاقب فریدی کے ناموں کا اعلان

نئی دہلی 12 مارچ (پریس ریلیز) ساہتیہ اکادمی ایگزیکیٹو بورڈ کے اجلاس میں ساہتیہ اکادمی کے تین اہم ایوارڈز کا اعلان کردیا گیا ہے۔ اردو میں سال 2020 کے لیے ساہتیہ اکادمی کا پُروقار ادبی ایوارڈ ’اماوس میں خواب‘ کے لیے حسین الحق کو دینے کا اعلان کیا گیا جبکہ بال ساہتیہ پُرسکار ’فخر وطن‘ کے لیے حافظ کرناٹکی کو اور یووا پُرسکار ’میں اپنی بات کا مفہوم دوسرا چاہوں : بانی کی شاعری کا مطالعہ‘ کے لیے ثاقب فریدی کو دینے کا فیصلہ کیا گیا۔ اکادمی کے چیئرمین ڈاکٹر چندرشیکھر کمبار کی صدارت میں آج رویندر بھون میں اکادمی کی ایگزیکٹو بورڈ کی میٹنگ میں مختلف ہندستانی زبانوں کے لیے ایوارڈز کو منظوری دی گئی۔ ساہتیہ اکادمی ایوارڈ کے لیے اس بار یکم جنوری 2014 سے 31 دسمبر 2018 کے دوران پہلی بار شائع ہونے والی نمائندہ کتابیں زیرغور آئیں۔ یہ ایوارڈ امتیازی نشان اور ایک لاکھ روپے پر مشتمل ہے جو آئندہ ایک پروقار تقریب میں پیش کیے جائیں گے۔
ساہتیہ اکادمی ایوارڈ 2020 پانے والے دیگر زبانوں کے چند ادیبوں کے نام ہیں : انامیکا (ہندی)، ارندھتی سبرمنیم (انگریزی)، ایم ویرپّا موئلی (کنڑ)، ہردے کول بھارتی (کشمیری)، کمل کانت جھا (میتھلی)، گردیو سنگھ رُوپانا (پنجابی)، مہیش چندر شرما گوتم (سنسکرت) نیکھیلیشور (تیلگو) وغیرہ۔
اکادمی کی بال ساہتیہ پُرسکار میں اس بار یکم جنوری 2014 سے 31 دسمبر 2018 کے دوران پہلی بار شائع ہونے والی نمائندہ کتابیں زیرغور آئیں۔ یہ ایوارڈ امتیازی نشان اور پچاس ہزار روپے پر مشتمل ہے جو آئندہ ایک پروقار تقریب میں پیش کیے جائیں گے۔ انعام پانے والوں میں حافظ کرناٹکی (اردو) کے علاوہ بال سوروپ راہی (ہندی)، وینیتا کولہو (انگریزی)، سید اختر حسین منصور (کشمیری)، رام چندر نایک (اڑیہ)، کرنیل سنگھ سومل (پنجابی)، صاحب بیجانی (سندھی)، پرچیتا گپتا (بنگالی)، نٹور پٹیل (گجراتی)، آبا گووند مہاجن (مراٹھی) شامل ہیں۔
یُووا پُرسکار میں اُن نوجوان ادیبوں کی کتابیں زیرغور آئیں جن کی عمر 1 جنوری 2020 کو 35 سال یا اس سے کم تھی۔ یہ ایوارڈ امتیازی نشان اور پچاس ہزار روپے پر مشتمل ہے جو آئندہ ایک پروقار تقریب میں پیش کیے جائیں گے۔ انعام یافتگان میں ثاقب فریدی (اردو) کے علاوہ دیوجین داس (آسامی)، نیوٹن کے بسومتاری (بوڈو)، گنگا شرما (ڈوگری)، یشیکا دت (انگریزی)، مسرور مظفر (کشمیری)، سونو کمار جھا (میتھلی)، انجنا باس کوٹا (نیپالی)، چندرشیکھر ہوتا (اڑیہ)، دیپک دھالیوان (پنجابی)، انجلی کسکو (سنتھالی)، شکتی (تمل) وغیرہ کے نام شامل ہیں۔
ایوارڈ کا فیصلہ الگ الگ جیوری کی میٹنگ میں ہوا جس کی صدارت متعلقہ مشاورتی بورڈ کے کنوینر نے کی اور جیوری کے تین ممبران شامل رہے۔ جیوری ممبران کی لسٹ علاحدہ منسلک کی جارہی ہے۔ کچھ زبانوں میں ایوارڈز کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔