روسی صدر کا اعلان،ہم ضرورت مند ممالک کو کرونا ویکسین فراہم کرنے کو تیار ہیں

ماسکو:روس کرونا وائرس کے علاج کے لیے تیار کردہ اپنی ویکسین ضرورت مند ممالک کو مہیّا کرنے کو تیار ہے۔وہ ہفتے کے روز جی 20 کی ورچوئل اجلاس سے خطاب کررہے تھے۔کریملن کے مطابق انھوں نے اپنی ورچوئل تقریر میں کہا کہ ’’مؤثر اور محفوظ ویکسین ہر کسی کو دستیاب ہونی چاہیے،روس ضرورت مند ممالک کو اپنی تیار کردہ کرونا وائرس کی ویکسین مہیا کرنے کو تیار نہیں۔انھوں نے کہا کہ روس اس سربراہ اجلاس کے ہر کسی کو محفوظ اور مؤثر ویکسین کی دستیابی یقینی بنانے سے متعلق مجوزہ فیصلے کی تائید کرتا ہے۔بلاشبہ ویکسین تمام لوگوں کو ملنی چاہیے ۔انھوں نے اعلان کیا کہ روس دنیا کی پہلی رجسٹرڈ ویکسین سپوتنک پنجم ضرورت مند ممالک دے گا۔روس کی دوسری ویکسین ایپی ویک کرونا بھی تیار ہے۔یہ نوووسبریسک ریسرچ سنٹر نے تیار کی ہے۔روسی ساختہ تیسری ویکسین بھی آنے والی ہے۔روسی صدر نے کرونا وائرس کی وبا کے نتیجے میں پیدا ہونے والے معاشی بحران کے بارے میں بھی تفصیل سے روشنی ڈالی ہے اور اس کو گذشتہ صدی کی عالمی کساد بازاری کے ہم پلہ قرار دیا ہے۔انھوں نے کہا کہ لوگوں کو 2020میں جس سطح کے مسائل کا سامنا ہوا ہے،وہ درحقیقت بے نظیر ہیں۔کرونا وائرس کی وبا،عالمی سطح پر لاک ڈاون اور معاشی سرگرمیوں کی معطلی نے ایک منظم اقتصادی بحران کو جنم دیا ہے۔دنیا میں عظیم کسادبازاری کے بعد ایسی اور کوئی مثال نہیں ملتی۔ولادی میر پوتین کا کہنا تھا کہ بعض مثبت اشاروں کے باوجود بڑے پیمانے پر بے روزگاری اور بڑھتی ہوئی غربت عالمی برادری کے لیے بڑے چیلنج ہیں۔جی 20 کا کردار اس چیلنج سے نمٹنا ہے۔اس گروپ کو عالمی ادارہ تجارت (ڈبلیو ٹی او) میں اصلاحات کے لیے مشترکہ حکمت عملیاں وضع کرنے اور ان پر عمل درآمد کی ضرورت ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ موجودہ درپیش چیلنجز کے پیش نظر ایک مستحکم ، مؤثراورکثیرجہت تجارتی نظام کے بغیر اس مقصد کا حصول ناممکن ہے۔یہ نظام آفاقی قواعد اور اصولوں پر مبنی ہونا چاہیے اور اس وقت ڈبلیو ٹی او کا کوئی متبادل نہیں ہے۔ہمیں فی الوقت یک طرفہ طور پر پابندیاں عاید کرنے کے رویّے کو ترک کرنے اور رسدی زنجیروں کی بحالی کی ضرورت ہے۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*