رابرٹ واڈرا نے رام مندر میں’ دان‘ سے کیا انکار،کہا،کبھی چرچ،مسجد،گرودوارہ میں دان نہیں کیا

جے پور:پرینکا گاندھی کے شوہر رابرٹ واڈرا نے ایودھیا میں تعمیر ہورہے رام مندر کے لیے دان دینے سے انکار کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر میں پہلے کسی چرچ ، مسجد یا گرودوارہ میں عطیہ کیا ہوتا تو میں بھی رام مندر کے لیے اپنا حصہ ڈالتا۔ واڈرا نے یہ باتیں مقامی اخبار سے گفتگو کے دوران کہیں ۔ جب ان سے سوال کیا گیا کہ آپ پر راجستھان میں زمین کی خریداری میں گڑبڑی کا الزام ہے ، اور یہ ایک انتخابی مسئلہ بھی بن گیا ، کیا آپ ان الزامات کے سائے میں سیاست میں آئیں گے ،تو اس کے جواب میں انہوں نے کہاجب بھی یہ حکومت (مودی حکومت) پریشانی میں پڑتی ہے تو میرا نام استعمال کرکے پریشانی دور کرلیتی ہے، بیجاالزامات لگاتی ہے ۔ میں قانون پر یقین رکھتا ہوں۔ قانونی کارروائی میں ہر چیز صاف ہوجائے گی۔میرے خلاف مقدمہ ایک عرصے سے چل رہا ہے ، سب جانتے ہیں کہ یہ کوئی سیاسی معاملہ ہے ، کاروباری معاملہ نہیں۔جو بھی دستاویزات تھیں ، وہ دی گئیں ، تمام سوالوں کے جوابات دیے گئے ہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ جب مجھے لگے کہ میں لوگوں کے لیے کچھ کرسکتا ہوں تو سیاست میں آؤں گا ۔میں لوگوں کی مشکلات کو سمجھتا ہوں، عوام کی آواز بلند کی جائے گی ۔ اس سلسلے میں میں نہیں بولوں گا ، لوگ بولیں گے، لوگ کھڑے ہوں گے اورجب کہیں گے کہ کب سیاست میں آنا چاہئے۔جب ان سے پوچھا گیا وہ کہاں سے الیکشن لڑیں گے ، راجستھان یا یوپی؟تو اس کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہر جگہ سے یہ مطالبہ کیا جارہا ہے کہ یہاں سے انتخاب لڑیں،لیکن جہاں سے میں لڑوں گا ، پہلے میں اس علاقہ کے لوگوں کے مسائل اور ان کے تمام پہلوؤں کو سمجھنے کی کوشش کروں گا۔ پھر مجھے معلوم ہوسکے گا کہ میں کس طرح وہاں کے لوگوں کی زندگی میں کیا تبدیلیاں لا سکتا ہوں۔ موجودہ سیاسی نظام اور حکومت سے کیا شکایت ہے ؟ کے سوال پر انہوں نے کہا کہ لوگ پوچھ رہے ہیں کہ ملک میں جمہوریت کا کیا مطلب ہے؟ حکومت جو بھی نئی پالیسی لا رہی ہے ، وہ کہہ رہی ہے کہ صرف یہ کام کرے گا اور کچھ نہیں سنا جائے گا۔ لوگوں کی شنوائی نہیں ہو رہی ہے۔ ایسے معاملات میں میں لوگوں کی آواز بلند کرنے کے لیے راہل اور پرینکا سے بات کرتا ہوں۔