ریاستوں کو فیصلہ کرنے کا حق ملناچاہیے:سچن پائلٹ

نئی دہلی:راجستھان کے نائب سی ایم سچن پائلٹ نے کہاہے کہ فیصلے کرنے کا حق ریاستی حکومتوں کو دیا جانا چاہیے۔ مرکز کا کام رہنمائی کرنا ہے۔ یہ الزام لگانے کا وقت نہیں ہے۔ یہ ملک کی سلامتی کا معاملہ ہے۔ اب تک جو محنت ہم نے کی ہے، اگر مزیدنرمی کی گئی تو ساری محنت رائیگاں جائے گی۔ لاک ڈاؤن کے بارے میں، انہوں نے کہاہے کہ اس کی افادیت بہت حد تک پہنچ گئی ہے۔ اب اگر آپ زیادہ مضبوطی سے لاک ڈاؤن کرتے ہیں تونقصان زیادہ ہوسکتا ہے اور منافع کم ہوسکتے ہیں۔ ملک کی موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے فیصلہ کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کہاپے کہ ریڈ زون میں یاجہاں انفیکشن پھیلتا ہے کسی بھی طرح کی نقل و حرکت کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔ جو بھی نقل وحرکت ہے وہ صرف گرین زون میں ہونی چاہیے۔سچن پائلٹ نے کہاہے کہ اس کا صلہ یہ ہے کہ یہ انفیکشن ابھی تک دیہات تک نہیں پھیل سکا، یہ صرف شہروں تک ہی محدودہے۔ابھی مزدوروں کی نقل مکانی ہونے والی ہے، ایسی صورت میں ہمیں بہت محتاط اقدامات کرنے چاہئیں۔لوگوں کی حفاظت ہمارے لیے ترجیح ہے اور تب ہی معیشت کو بحال کرناترجیح ہوگی۔