شیووہارفساد : راشدکو عدالت نے پیشگی ضمانت دی

نئی دہلی:دہلی کی کرکرڈوما عدالت نے آج دہلی فساد میں جلائی گئی مدینہ مسجد کے ذمہ دار حاجی محمد ہاشم کے بیٹے محمد راشد کی پیشگی ضمانت منظور کی ہے۔راشد کے خلاف دہلی پولس نے ایف آئی آر درج کی تھی اور اس کی گرفتاری کی تیاری کررہی تھی ۔حالاں کہ حاجی محمد ہاشم اور محمد راشد ان مظلوم لوگوں میں شامل ہیں جن کے مکان کو فسادیوں نے جلاد یا تھا اور ان کی مدینہ مسجد کو سیلنڈرکے ذریعہ تباہ کردیاتھا ۔محمد راشد نے ان واقعات کے خلاف شیووہار کے چند لوگوں کے خلاف پولس میں شکایت کی تھی ، ان کے والد حاجی محمد ہاشم نے بھی پولس میں اس سے متعلق شکایت کی تھی ، لیکن پولس نے الٹے انصاف دلانے کے بجائے ان پر ایف آئی آر درج کردی اور حاجی محمد ہاشم کو قید کرلیا ، گزشتہ سال چالیس دن کے بعد حاجی محمد ہاشم ضمانت پر باہر آگئے ،لیکن پولس ان کے بیٹے محمد راشد کو نذر زنداں کرنے پر مصر تھی۔ عدالت نے گزشتہ ماہ اپریل میں سماعت کے دوران پولس کے اس رویہ پر سخت ناراضی کا اظہار کیا تھا اور کہا تھا کہ یہ طریقہ غیر معقول اور انصاف کی راہ میں کانٹا بونے کی طرح ہے ۔اس کے برعکس حاجی محمد ہاشم ، محبوب عالم ، محمدراشد اور حاجی عبد الجبار نے فسادیوں کے ذریعہ مدینہ مسجدکو پہنچنے والے نقصان کے سلسلے میں 25.06.2020 کو پولس تھانہ میں شکایت درج کروائی تھی۔ شکایت میں 15 افراد کا نام لیا گیا تھا جو مسجد پر حملے میں ملوث تھے۔ لیکن پولس نے کوئی ایف آئی آر درج نہ کرائی ۔اس کے پیش نظر کمیٹی نے عدالت سے رجوع کیا اور مجسٹریٹ کی عدالت نے ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت کی تھی۔ حیرت تو اس بات پر ہے کہ پولس نے اس کے خلاف اپیل کردی جو اب تک عدالت میں زیر التوا ہے ۔