دہلی:ریلوے کی زمین پر تعمیرجھگیوں کوہٹانے کے خلاف اجے ماکن سپریم کورٹ پہنچے

 

نئی دہلی، کانگریس کے سینئرلیڈر اجے ماکن نے دہلی میں ریلوے لائن کے ساتھ تعمیر کچی آبادیوں کوہٹانے سے پہلے ان کی بحالی کا بندوبست کرنے کے لئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی ہے۔ عدالت عظمی نے 31 اگست کو اپنے فیصلے میں دہلی میں ریلوے لائن کے ساتھ 48000 کچی آبادیوں کو تین ماہ کے اندر اندر ہٹانے کی ہدایت دی تھی۔ عدالت نے کہا کہ اس حکم کے نفاذ میں کسی قسم کی سیاسی مداخلت نہیں ہونی چاہئے۔ ماکن کے ذریعہ دائر کی جانے والی اس درخواست میں، ریلوے، دہلی حکومت اور دہلی اربن ہاؤسنگ ریفارم بورڈ کو ہدایت دینے کی درخواست کی گئی ہے کہ ان کچی آبادیوں کے رہائشیوں کو ہٹانے سے پہلے کہیں اور منتقل کردیا جائے۔ درخواست میں اپیل کی گئی ہے کہ وہ وزارت ریلوے، حکومت دہلی اور دہلی اربن ہاؤسنگ ریفارم بورڈ کو دہلی کی کچی آبادی اور بحالی پالیسی 2015 اور اس معاملے میں کچی آبادیوں کوہٹانے کے پروٹوکول پرعمل کرنے کی ہدایت کرے۔ امان پنور اور نتن کے توسط سے دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ عدالت کے 31 اگست کے حکم کے بعد وزارت ریلوے نے کچی آبادیوں کو مسمار کرنے کے لئے نوٹس جاری کردیے ہیں اور 11 اور 14 ستمبر کو ایک مہم چلائی جائے گی۔