ریلوے 15 اکتوبر سے 200 خصوصی ٹرینیں چلائے گا

نئی دہلی:تہوارکے موسم میں مسافروں کی سہولت اوربہارالیکشن کودیکھتے ہوئے ریلوے 15 اکتوبر سے 30 نومبر کے درمیان 200 خصوصی ٹرینیں چلا رہا ہے۔بہارکی طرف زیادہ توجہ ہے۔کیوں کہ وہاں الیکشن ہے۔اورجومزدورپیدل یاکسی طرح پہنچے ہیں اورسرکارسے ناراض ہیں،وہ بھی ٹرینوں کی سہولیات کی وجہ سے کام کے لیے بڑے شہرنکل سکتے ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ ریلوے نے اس وقت تمام عام مسافر ٹرینوں کو غیر معینہ مدت کے لیے منسوخ کردیا ہے۔ کورونا کی وبا کے دوران لاک ڈاؤن نافذ ہونے کے بعد یہ ٹرینیں 22 مارچ سے منسوخ ہیں۔بعدازاں ، ریلوے نے 12 مئی سے دہلی کو ملک کے مختلف حصوں سے منسلک کرنے والی 15 خصوصی راجدھانی ایکسپریس ٹرینوں اوریکم جون سے 100 لمبی دوری والی ٹرینوں کو شروع کیا۔ 12 ستمبر سے 80 اضافی ٹرینیں چلائی گئی ہیں۔ریلوے نے ریاستی حکومتوں کی ضروریات اور وبائی صورتحال کے پیش نظر مسافروں کی سہولیات کا روزانہ جائزہ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ریلوے بورڈکے چیئرمین اور سی ای او وی کے یادونے رواں ماہ کے شروع میں بتایا تھا کہ انھوں نے زون کے جنرل منیجرزسے ملاقات کے بعد ہدایت دی ہے کہ وہ مقامی انتظامیہ سے بات کریں اور کورونا وائرس کی حالت کا جائزہ لیں۔ ان سے ایک رپورٹ طلب کی گئی ہے اور اس کی بنیاد پر یہ فیصلہ کیا جائے گا کہ تہوار کے سیزن میں کتنی خصوصی ٹرینیں چلائی جائیں گی۔ اس وقت ہمارا اندازہ ہے کہ لگ بھگ 200 ٹرینیں چلیں گی ، لیکن یہ تعداد اور زیادہ ہوسکتی ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ جہاں تک مسافر ٹرینوں کا تعلق ہے ، ہم ٹرینوں ، ریل ٹریفک اور کوویڈ 19 کی صورتحال کاہر دن جائزہ لیں گے۔ جہاں بھی ضرورت ہوگی ، ہم ٹرینیں چلائیں گے۔