پوراملک کھل رہاہے توصرف مذہبی مقامات ہی بندکیوں؟:سپریم کورٹ

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ جھارکھنڈ میں دیوگھر کے بیدیاناتھ مندر میں محدود تعداد میں عقیدت مندوں کو جانے کی اجازت ہوگی۔کورٹ نے کہاہے کہ جب پوراملک کھل رہاہے توصرف مذہبی مقامات کیوں بندہوئے ہیں۔ آج عدالت نے جھارکھنڈ حکومت کو مشورہ دیا کہ اسے اس ضمن میں ایک نظام بنانا چاہیے۔ عقیدت مندوں کو ای ٹوکن جاری کرنابھی ایک راستہ ہوسکتا ہے۔ عدالت نے کہاہے کہ آنے والے مہینوں میں نئے نظام کو نافذ کرنے کی کوشش کی جانی چاہیے۔سپریم کورٹ نے کہاہے کہ ای درشن مندر میں کیسے ہوسکتاہے ۔سپریم کورٹ نے ریاستی حکومت سے کہاہے کہ بحران کے دوران کورونامیں بھیڑنہیں لگنی چاہیے ، لہٰذا عقیدت مندوں کے لیے مندر میں محدود تعداد میں ’’درشن‘‘کا انتظام کیوں نہیں کرتے ہیں۔یوپی میں صرف پانچ لوگوں کومسجدجانے کی اجازت ہے۔ اس معاملے میں بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ نشی کانت دوبے نے ہائی کورٹ کے اس حکم کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے جس میں ہائی کورٹ نے لوگوں کو مندر میں ای درشن کرنے کی اجازت دی ہے۔