24.2 C
نئی دہلی
Image default
قومی خبریں

پرائیویٹ لیب کو وائرس کے جانچ کی اجازت ملی،عام آدمی پھربھی ٹیسٹ نہیں کراسکے گا

نئی دہلی:بھارت میں مسلسل بڑھتے معاملات کو دیکھتے ہوئے آئی سی ایم آرنے پرائیویٹ لیب کو بھی کوڈو -19 کا ٹیسٹ کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ اس کے لیے خاص قوانین بھی بنائے گئے ۔ جن پرسختی سے عمل ان لیبز کوکرناہوگا۔ایسی شرائط لگائی گئی ہیں کہ عام آدمی پھربھی ٹیسٹ نہیں کراسکے گا۔یہ اہم سوال برقرارہے۔ اگرچہ اب تک بھارت میں کل 12 نجی لیب کواجازت دی گئی ہے۔آسی ایم آرکے ڈائریکٹر جنرل بلرام بھارگو نے معلومات دیتے ہوئے ؓبتایاہے کہ بھارت میں ابھی تک 12 لیب کوٹیسٹ کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ وہیں ان 12 لیب کے 12 ہزار سے زیادہ کلیکشن سینٹرہے جس سے ٹیسٹ میں بہت مددملے گی۔ اس ٹیسٹ کے لیے 4500 روپے لگیں گے۔ان پرائیویٹ لیب میں کوئی بھی ٹیسٹ کرا سکتاہے لیکن اس کے لیے بہت قوانین ہیں۔کوئی بھی اپنی مرضی ٹیسٹ نہیں کرسکتاہے۔ کوئی لیب نہ کوئی شخص۔ منظور شدہ ڈاکٹر کے نسخے پر ہی یہ ٹیسٹ ہوگا۔ ٹیسٹ انہی کا ہوگا جوحال ہی میں بیرون ملک سے واپس آیاہو، یا کسی متاثرہ شخص کے رابطے میں آیا ہیں ۔ اس کے علاوہ ہیلتھ کیئر ورکر یعنی ڈاکٹر، نرس کروا سکتے ہیں۔ وہیں پرائمری ٹیسٹ اورکنفرمیشن ٹیسٹ دونوں کے لیے پرائیویٹ لیب صرف 4500 روپے ہی لے سکتے ہیں۔آئی سی ایم آر کا خیال ہے کہ پرائیویٹ لیب کو اس کام میں شامل کرنے سے حکومت پر دباؤ کم ہو جائے گا۔وہیں ان نجی لیب کا طویل لیب چین ہے جسے کلیکشن میں آسانی ہوگی۔وہیںزیادہ ہونے پرلوگوں کو بھی سہولت ہوگی۔انھوںنے کہاہے کہ ایک چیز لوگوں کو سمجھنا ضروری ہے کہ پرائیویٹ لیب ہے تو کوئی بھی نہیں ایسے جاکر ٹیسٹ کراسکتاہے۔اس کے لیے ہم نے سخت گائیڈلائن جاری کی ہے۔کوئی یہ سوچے کی میں جاکر ٹیسٹ کرا لیتا ہوں تویہ غلط ہے۔آپ کو سمجھنا ہوگا کہ دنیا میں یہ وبا پھیلی ہے اور ایسے ہی ٹیسٹ کرائیں گے تو وہ ٹیسٹ کٹ ضائع ہو جائے گی اور ضرورت کے وقت نہیں ہوگا۔

متعلقہ خبریں

Leave a Comment